پاکستان

موٹروے واقعہ، شہباز شریف نے حکومتی نا اہلی کا پول کھول کر دیا

پولیس افسر نے بچی کے سر پر دست شفقت رکھنے کے بجائے یہ باتیں کی گئیں، اس افسر کو لگوانے والا سینہ تان کر کھڑا تھا

مسلم لیگ (ن)کے صدر و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے موٹروے واقعہ پر حکومتی نا اہلی کا پول کھولتے ہوئے وزیراعظم پر شدید تنقید کی۔

قومی اسمبلی سے خطاب میں شہباز شریف نے کہا کہ ایک پولیس افسر یہ کہے کہ خاتون رات کو کیوں نکلی، اس راستے سے کیوں نہیں گئیں، کوئی ذی شعور شخص ایسا سوچ بھی نہیں سکتا، پوری قوم سوگوار تھی حکومت اس بحث میں الجھی ہوئی تھی کہ موٹر وے پر کس کا کنٹرول ہے، تمام سیاسی لیڈر شپ نے ذمہ داری کا ثبوت دیا۔ انہوں نے کہا کہ موٹروے واقعے پر عمران خان غائب ہوئے ایک لفظ تک نہیں کہا، جب قوم تلاش کرتی ہے کہ ہمارا وزیراعظم کہاں ہے وہ غائب ہوجاتے ہیں، وزیراعظم صرف اپوزیشن کو دیوار سے لگانے میں مصروف ہیں۔ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ موٹروے پر اس واقعہ نے ہر آنکھ کو اشک بار کر دیا، اس واقعے پر بزرگوں، ماں اور بہنوں کے سر شرم سے جھک گئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک پولیس افسر کہے کہ رات کو کیوں نکلی، پیٹرول چیک کیوں نہیں کیا، اس بچی کے سر پر دست شفقت رکھنے کے بجائے یہ باتیں کی گئیں، اس افسر کو لگوانے والا سینہ تان کر کھڑا تھا، کچھ رپورٹس میں اس افسر کی کارکردگی بھی بتائی گئی۔

قصور میں زینب کیس کے حوالے سے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ قصور میں بچی زینب کے ساتھ زیادتی ہوئی، پی ٹی آئی نے کس طرح قصور جاکر زینب واقعے کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش کی تھی، ان کی کوشش تھی کہ بچی کے ساتھ زیادتی کے واقعے کو استحصال کیلئے استعمال کیا جائے، زینب کیس میں 1300 سیمپلز فارنزک لیب کو دیے گئے تھے، عدالت میں زینب قتل کیس کے ملزم کا کیس چلا اور سزا ہوئی۔ وزیراعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ عمران خان نیازی اس وقت گلا پھاڑ پھاڑ کر سیاسی اسکورنگ کررہے تھے، موٹروے واقعے پر عمران خان غائب ہوئے ایک لفظ تک نہیں کہا، وزیراعظم کا وطیرہ بن چکا ہے، ان کا اسٹائل ہے ان کا یہ کردارہے، جب قوم تلاش کرتی ہے کہ ہمارا وزیراعظم کہاں ہے وہ غائب ہوجاتے ہیں خاموش ہوجاتے ہیں۔

لیگی صدر کا کہنا تھا تمام سیاسی قیادت نے قوم کے ساتھ آواز ملائی کہ مجرموں کو پکڑا جائے، تمام سیاسی قیادت نے سی سی پی او لاہور کے بیان کی مذمت کی، سفارش پر لاہور میں بدنام زمانہ پولیس افسر کو لگایا گیا۔ شہباز شریف نے مطالبہ کیا کہ معلوم کیا جائے موٹروے پراہلکار تعینات کیوں نہیں کیے گئے، اس بدنام زمانہ پولیس افسر کو کیوں تعینات کیا گیا؟ موٹروے واقعہ کی مکمل تحقیقات کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں