پاکستانفیچرڈ پوسٹ

شہباز شریف کی گرفتاری، مسلم لیگ ن کی جوابی حکمت عملی تیار‘ مولانا فضل الرحمن اور پیپلز پارٹی بھی سینہ تان کر سامنے آگئی

شہباز شریف کی گرفتاری کسی جرم کی وجہ سے نہیں بلکہ اپنے بھائی کے ساتھ کھڑے ہونے کی وجہ سے ہوئی

مسلم لیگ ن کے صدر و قائد حزب اختلاف شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد ن لیگ نے جوابی حکمت عملی تیار کر لی اور فضل الرحمن اور پیپلز پارٹی بھی سینہ تان کر سامنے آگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد پاکستان مسلم لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے پریس کانفرنس میں کہا کہ شہباز شریف کی گرفتاری کسی جرم کی وجہ سے نہیں بلکہ اپنے بھائی کے ساتھ کھڑے ہونے کی وجہ سے ہوئی۔ شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد ہنگامی نیوز کانفرنس میں مریم نواز نے کہا کہ نوازشریف کی تقریر اور آل پارٹیز کانفرنس کے فیصلوں پر عملدرآمد ہوگا، تحریک چلے گی اور بھرپور طریقے سے چلے گی، نوازشریف جلد وطن واپس آکر اپوزیشن کی تحریک کی قیادت کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور مریم نواز کے بیانیے کا بوجھ ہر ایک نہیں اٹھا سکتا، شہباز شریف اپنے بھائی کے ساتھ کھڑا رہے گا، ن لیگ میں سیش نہیں نکلے گی، ایسی باتیں ش لیگ نکالنے میں ناکامی کی چیخیں ہیں۔ مسلم لیگ (ن)کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ اگر اس ملک میں کوئی قانون ہوتا تو شہباز شریف نہیں بلکہ عاصم سلیم باجوہ گرفتار ہوتے۔

مریم نواز نے کہا کہ میں سن رہی ہوں کہ آپ کہہ رہے ہیں اپوزیشن مستعفی ہوگی تو نئے الیکشن کرالیں گے، آپ کو اس کی مہلت کہاں ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ نواز شریف کی آواز پر لبیک کہتی ہے، قوم کو خوشخبری دیتی ہوں کہ کہ اب نواز شریف پوری قوت کے ساتھ ن لیگ کی قیادت کریں گے۔ مریم نواز نے کہا کہ چاہے شہباز شریف کو گرفتار کرلیں یا مجھے گرفتار کرلیں آل پارٹیز کانفرنس میں طے کیے گئے ایجنڈے کے تحت تحریک پورے جذبے کے ساتھ چلے گی، یہ تحریک رکنے والی نہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور مریم نواز کے بیانیے کا بوجھ ہر ایک نہیں اٹھا سکتا، شہباز شریف اپنے بھائی کے ساتھ کھڑا رہے گا، ن لیگ میں سیش نہیں نکلے گی، ایسی باتیں ن لیگ میں سے ش لیگ نکالنے میں ناکامی کی چیخیں ہیں۔

Back to top button