پاکستان

آرمی چیف سے ملا قاتیں،شاہد خاقان عباسی کا کھلےعام اعتراف

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نےکہا ہے کہ ن لیگی رہنماؤں کا آرمی چیف سےملنا نارمل بات ہے

مسلم لیگ ن کےسینئرنائب صدراورسابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نےکہا ہے کہ ن لیگی رہنماؤں کا آرمی چیف سےملنا نارمل بات ہے، آرمی چیف سےملنا کوئی سیاست نہیں ہوتی، ایوب کےدورسےآرمی چیفس سےملنےجاتا رہا ہوں، آرمی چیف پاکستان کےشہری ہیں، شہریوں کا ملنے پرکسی کواعتراض نہیں ہونا چاہیے۔انہوں نےکہا کہ آرمی چیف سےملاقاتیں ہوں یا نہ ہوں،ان کا سیاسی بھونچال سےکوئی تعلق نہیں ہے، ہم سب اس ملک کےشہری ہیں،اگرآپ مجھ سےاورمیں آپ سےملنا چاہوں تومل لیں گے۔ ن لیگی رہنماؤں کا آرمی چیف سےملنا نارمل بات ہے۔ میرے علم میں ملاقاتیں نہیں تھیں، میں کوئی مانیٹرنہیں لگا ہوا کہ کون کس سےمل رہا ہے،ہم سب آزاد شہری ہیں۔

ن لیگ کے رہنماءپاکستان کےشہری ہیں،آرمی چیف بھی پاکستان کےشہری ہیں، اگروہ مل لیں توکسی کواعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ قائد ن لیگ نےاس لیےپابندی لگائی کہ ملاقاتوں کوغلط رنگ دیا گیا، اس اب تشہیرکرکےملاقات کی جائےگی اگرملاقات نہیں ہوگی توبات ختم ہوجائےگی یہی نقصان ہوگا۔ روزمرہ زندگی میں ملاقاتیں ہوتی رہتی ہیں۔ انہوں نےایک سوال پرکہ ڈی جی آئی ایس پی آرنےکہا کہ ملاقات کا مقصدنوازشریف اورمریم نوازکیلئےسہولت لینا تھا،جس پرشاہد خاقان عباسی نےکہا کہ کیایہ بات ڈی جی آئی ایس پی آرنےکہی ہے؟اگرکی ہے تویہ بات درست نہیں ہے۔

آرمی چیف سےزبیرسےملےہیں، بےشک انہوں نےدوکی بجائےتین ملاقاتیں ہوئی ہوں۔آرمی چیف سےملنا کوئی سیاست نہیں ہوتی۔ یاد رہے آرمی چیف سے ن لیگی رہنماء محمدزبیرکی ملاقات پرحکومت نےاعتراض کیا اورسیاسی ایشوبنا دیا جس پرقائد ن لیگ نےبغیراجازت اوربغیر تشہیرآرمی چیف سےن لیگی رہنماؤں کی ملاقات پرپابندی عائد کردی ہے۔

Back to top button