پاکستان

مسلم لیگ ن کی نئی چال، حکومت کو لینے کے دینے پڑ گئے

ہم خود آئے ہیں،گرفتارکرنا ہے توکرلیں،جب تک مکمل ثبوت نہیں ملتے ہم آپ کو گرفتار نہیں کریں گے: ایس ایچ او

مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کے ترجمان محمد زبیر اور پارٹی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل عطا اللہ تارڑ بغاوت کے مقدمے میں گرفتاری کے لیے تھانے پہنچ گئے۔

لاہور کے تھانہ شاہدرہ آمد کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق گورنر سندھ اور ن لیگی رہنما محمد زبیر کا کہنا تھا کہ ہم خود آئے ہیں،گرفتارکرنا ہے توکرلیں، یہ مقدمے اس لیے بنائے گئے تاکہ اپوزیشن کے جلسے کے دن گرفتاریاں کی جائیں۔ محمد زبیرکا کہنا تھا کہ ہمارے آنے سے پہلے تفتیشی افسر ہی غائب ہوگیا، اب کوئی مقدمے کی ذمہ داری لینے کو تیار نہیں،گرفتاری نہیں بنتی تو مقدمہ خارج کریں۔

اس موقع پر ن لیگی رہنما عطا اللہ تارڑ کا کہنا تھاکہ درخواست آنے پر فریقین کو بلایا جاتا ہے،اب انچارج انویسٹی گیشن کا فون بند ہے، گرفتاری نہیں بنتی تو مقدمہ خارج کریں۔ دونوں لیگی رہنماؤں نے ایس ایچ او تھانہ شاہدرہ زاہد رندھاوا سے ملاقات میں اپنی گرفتاری کا کہا توایس ایچ او کاکہنا تھا کہ جب تک مکمل ثبوت نہیں ملتے،گرفتار نہیں کریں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں سابق وزیراعظم نوازشریف سمیت مسلم لیگ (ن)کی قیادت کے خلاف بغاوت کا مقدمہ مذکورہ تھانے میں درج کیا گیا تھا جس پر اپوزیشن جماعتوں نے سخت رد عمل کا اظہار کیا ہے جب کہ حکومت نے اس مقدمے سے لاتعلقی کا اظہار کیا ہے۔ ایف آئی آر کے مطابق نواز شریف نے اشتعال انگیز تقاریر کیں، ملک کے مقتدر اداروں کو بدنام کیا اور بھارت کی پالیسیوں کی تائید کی تاکہ پاکستان کا نام ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں ہی رہے۔ مقدمے کا مدعی بدر رشید ہیرا پاکستان تحریک انصاف یوتھ ونگ راوی ٹان کا صدر ہے وہ بھی 2 روز سے گھر سے غائب ہے۔

Back to top button