پاکستان

مولانا،مریم نوازملاقات،پیپلزپارٹی ناراض،نیا پنڈورا باکس کھل گیا

پیپلزپارٹی نےاس حوالےسےاپنےتحفظات کااظہارکیا ہےکہ انہیں کیوں نظراندازکیا گیا

اپوزیشن جماعتوں نے پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے پلیٹ فارم سے حکومت کے خلاف لڑائی کا اعلان کر دیا ہے اور جاتی امرامیں مولانا فضل الرحمان اور مریم نواز نے اس پر اتفاق رائے بھی کیا ہے تاہم مسلم لیگ ن نے پوری احتجاجی تحریک کی کمان مولانا فضل الرحمان کے ہاتھ میں نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے اور نہ ہی کسی کو احتجاجی تحریک ہائی جیک کرنے کی اجازت دے گی یہ بات بھی قابل ذکر بات ہے مولانا فضل الرحمن پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے پلیٹ فارم سے مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر مریم نواز سے ملاقات کے لیے جاتی امراگئے مگر دوسری اتحاد ی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کو نظر انداز کیا گیا ،

ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی نے اس حوالے سے اپنے تحفظات کااظہار کیا ہے کہ انہیں کیوں نظر انداز کیا گیا مولانا فضل الرحمن اور مریم نواز میں ہونے والی ملاقات میں اس بات پر بھی گفتگو ہوئی کے تحریک پر کتنے اخراجات آئیں گے جس کے لئے فنڈز جمع کرنے کا طریقہ کار کیا ہوگا مسلم لیگ ن کیا حصہ دے گی جے یو آئی ف کا کیا کردار ہوگا اور پیپلز پارٹی اور دیگر جماعتیں کتنا کتنا چندہ دیں گی مولانا فضل الرحمن یہ معاملات آئندہ میٹنگ میں پاکستان پیپلز پارٹی اور دیگر جماعتوں سے دیگر جماعتوں کے سامنے بھی رکھیں گے۔مریم نواز نے مولانا فضل الرحمن کو یقین دہانی کرائی ہے کہ ہر مسلم لیگ ن ہر طرح سے ان کے ساتھ ہے۔

Back to top button