پاکستانفیچرڈ پوسٹ

اسٹیبلشمنٹ وزیراعظم عمران خان کوکب اورکیسےگھربھیجے گی

اسٹیبلشمنٹ وزیراعظم عمران خان کوکب اورکیسےگھربھیجے گی،تجزیہ کارنجم سیٹھی نےمستقبل کا سیاسی منظرنامہ پیش کردیا سینئرصحافی و تجزیہ کارنجم سیٹھی نے کہا ہے کہ عمران خان کواس وقت تک ہلایا بھی نہیں جاسکتا جب تک ’ستون‘ ان کےساتھ ہے، جب وہ ان کے ساتھ کھڑے ہیں ان کو کوئی بھی نہیں ہلاسکتا ، اس صورتحال میں سیاسی درجہ حرارت کم کرنےکے تین طریقے ہوسکتے ہیں ۔ یوٹیوب چینل پرگفتگومیں انہوں نے کہا کہ ایک طریقہ تو یہ ہے کہ موجودہ صورتحال میں اسٹیبلشمنٹ والے وزیراعظم عمران خان کو سمجھا سکتے ہیں کہ اپوزیشن رہنماؤں کی گرفتاریاں نہ کریں ، نیب کو پیچھے ہٹائیں ، کچھ لین دین کریں ، اور اپوزیشن کے ساتھ بیٹھ کر ان کی ڈیمانڈز کو پورا کریں ، کیوں کہ خطرات بہت سارے ہیں ، اس صورتحال میں ملک کو مل جل کر چلانا ہے، ان حالات میں آپ کو زیادہ سپورٹ نہیں کرسکتے، لیکن یہ سب کرنے کے لیے ضروری ہے ان اندرونی طور پر پر دباؤ ڈالا جائے ۔

نجم سیٹھی نے کہا کہ دوسرا آپشن یہ ہے کہ اگرعمران خان یہ بات نہیں مانتے اورانکار کردیتے ہیں تو پھراسٹیبلشمنٹ کیا کرے گی؟ پھر ظاہر ہے انہیں راستے کھولنے کے لیے وزیراعظم عمران خان کو فارغ کرنا پڑے گا ، فارغ کرنے کے راستے سب کو پتہ ہی ہیں ، جس دن انہوں نے علیحدگی اختیارکرلی اوراپوزیشن کےراستےکھل گئےتودس دن کے اندرلوگ ادھرادھرہوجائیں گے، اورپارلیمنٹ کے اندرہی تبدیلی آجائے گی ، کیوں کہ سب کچھ ستون کی وجہ سے ہی ہے، جس دن وہ ہٹ گئے تو سارے ادارے بھی خود بخود پیچھے ہٹ جائیں گے، اوراپوزیشن سے بات چیت کرنے کے بعد انہیں سیاسی روڈ میپ میں شریک کریں گے۔ تجزیہ کار کے مطابق اگر ایسا نہیں ہوتا تو تیسرا طریقہ یہ ہے کہ پھر اسٹیبلشمنٹ براہ راست اس میں مداخلت کرے، کیوں کہ لڑائی ہورہی ہے جس کوئی سن ہی نہیں رہا،جس سے ملک کا نقصان ہورہا ہے،جس کی وجہ سے مختلف ادارے بھی اس کا شکار ہورہے ہیں، جس کے بعد اسٹیبلشمنٹ کی براہ راست مداخلت کس طرح سے ہوتی ہے یہ سب کو معلوم ہے، میں اس کا نام لینا چاہتا۔

Back to top button