پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پارلیمنٹ پارٹی کے اجلاس میں پہلی مرتبہ وزیراعظم کی ممبران کیلئے انوکھی شرط‘ ممبر پارلیمنٹ کی عمران خان کے ساتھ تلخ کلامی‘ اندرونی کہانی سامنے آگئی

ممبر پارلیمنٹ اور وزیراعظم عمران خان کے درمیان ہونیوالی تلخ کلامی کی سب سے بڑی وجہ ملک بھر میں بڑھتی ہوئی مہنگائی تھی

پارلیمنٹ پارٹی کے اجلاس میں پہلی مرتبہ وزیراعظم نے ممبران کیلئے انوکھی شرط رکھی جبکہ ممبر پارلیمنٹ کی عمران خان کے ساتھ تلخ جملوں کا تبادلہ بھی ہوا۔

ذرائع کے مطابق پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کے آغاز پر ہی ماحول میں کشیدگی کا شکار ہوگیا۔ وفاقی وزیرمراد سعید نے کہا عطا اللہ بات شروع کریں گے جس پر رکن قومی اسمبلی ثنا اللہ مستی خیل اپنی نشت پر کھڑے ہوگئے۔ذرائع کے مطابق ثنا اللہ مستی خیل نے کہا کہ میں پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر نہیں آزاد منتخب ہوا ہوں۔ ثنا اللہ مستی خیل نے پارلیمانی پارٹی اجلاس میں حکومتی کارکردگی اور وزرا اور مشیروں پر بھی کڑی تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور عوام کے لیے حالات بہتر ہوتے نظر نہیں آرہے، عوام بجلی اور گیس کے بل دینے کے قابل نہیں رہے، ملک میں خوراک کا بحران پیدا ہوتا نظر آرہا ہے۔

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک کے حالات ہماری وجہ سے خراب نہیں ہیں، جو آج جلسے کررہے ہیں ان لوگوں نے ملک کا بیڑا غرق کیا، حماد اظہر اور فخر امام کو چینی گندم کے بحران پر قابو پانے کا ٹاسک سونپا ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ اپوزیشن کے جلسوں سے پریشان نہ ہوں، ہم سے بڑے جلسے کسی نے نہیں کیے۔ اس موقع پر رکن قومی اسمبلی نور عالم خان نے کہا کہ آپ کی ٹیم ناقص ہے لیکن آج ہم آپ کے ساتھ کھڑے ہیں، حکومت پر مشکل وقت ہے اس لیے تحفظات کے باوجود ہم ساتھ کھڑے ہیں۔واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے پہلی مرتبہ پارلیمنٹ پارٹی کے اجلاس میں انوکھی شرط رکھی کہ کوئی بھی ممبر اجلاس میں موبائل فون نہیں لے کر جائے گا جس کے بعد اجلاس میں شامل ہونے ممبران نے موبائل فون باہر جمع کروائے۔

Back to top button