پاکستان

پی آئی اے سے کتنے پلائٹس اور ملازمین کو نکالا گیا، غلام سرور نے سچ بتا دیا

جب ہم نے حکومت سنبھالی تو اس وقت پی آئی اے400 ارب سے زائد کی مقروض تھی

وقافی وزیر ہوا بازی غلام سرور خان کا کہنا ہے کہ جعلی ڈگریوں کے باعث قومی ائیرلائنز (پی آئی اے) سے 17 پائلٹس سمیت 762 ملازمین کو نکالا گیا ہے۔

غلام سرور خان نے بتایاکہ262 مشکوک لائسنس رکھنے والے پائلٹس کو معطل بھی کیا گیا ہے۔ غلام سرور خان کا کہنا تھاکہ جب ہم نے حکومت سنبھالی تو اس وقت پی آئی اے400 ارب سے زائد کی مقروض تھی۔ وزیر ہوا بازی کا مزیدکہنا تھاکہ پی آئی اے اور اس کے اثاثوں کی فروخت کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے۔

خیال رہے کہ چند ماہ قبل کراچی میں ہونے والے طیارہ حادثے کی رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش کرتے ہوئے وفاقی وزیر ہوابازی نے 262کمرشل پائلٹس کے لائسنس کو مشکوک قرار دیا تھا۔ پی آئی اے نے مشتبہ لائسنس رکھنے والے تمام پائلٹس کوگراؤنڈ کرنیکا فیصلہ کیا تھا جب کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے بھی پائلٹس کے جعلی لائسنس کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی سے رپورٹ طلب کرلی تھی۔وفاقی وزیرکے بیان کے بعد امریکا اور یورپی یونین سمیت مختلف ممالک نے پی آئی اے کی پروازوں پر پابندی عائد کردی تھی۔

Back to top button