پاکستان

سی پیک کا مستقبل،مولانا فضل الرحمان نےتشویشناک بات بتادی

سربراہ جےیو آئی کا کہنا ہےکہ پی ڈی ایم کا ہرجلسہ دوسرے کا ریکارڈ توڑے گا،ہم مطمئن ہیں

ملتان میں میڈیا سےبات کرتےہوئےسربراہ جمعیت علمائےاسلام (ف) مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ گوجرانوالہ،کراچی اورکوئٹہ میں پی ڈی ایم جلسےمیں بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے،عوام نےحکومت سےبیزاری کا اظہارکیا ہے، ہم مطمئن ہیں کہ تحریک کامیابی سے آگے بڑھے گی، ہمارا ہر جلسہ دوسرے جلسے کا ریکارڈ توڑے گا۔

ایک سوال پر مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ میں اصولوں پر سودے بازی نہیں کرتا، سیاست میں مصلحتیں آتی رہتی ہیں، آپ غالبا کووڈ 19 کی بات کررہے ہیں، ہم تو کووڈ 18 سے نبرد آزما ہیں اور یہ جنگ جاری رہے گی، پاکستان میں حکومت نہیں، جو ہے وہ بیساکھی پر کھڑی ہے، ملکی حالات کس جانب جارہے ہیں سب دیکھ رہے ہیں، سی پیک کے مستقبل کو تباہ کر دیا گیا ہے، حکومت کو ادراک ہے لوگ انہیں نااہل سمجھتے ہیں۔

سربراہ پی ڈی ایم نے کہا کہ حکومت نے پی ڈی ایم میں پھوٹ ڈالنے کی کوشش کی ، صفدراعوان کی گرفتاری پی ڈی ایم کے خلاف سازش تھی، ملکی تاریخ میں پہلی بار پولیس افسران کا جارحانہ رد عمل سامنےآیا، ہم جلسے کرتے رہیں گے تحفظ دینا ریاست کی ذمہ داری ہے، ہم نہ مذاکرات کرتے ہیں اور نہ مذاکرات کے حق میں ہیں، الیکشن کمیشن 2018 کےانتخابات کو منسوخ کرے اور نئے انتخابات کا اعلان کرے۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ  پی ڈی ایم کے لئے بھارت کے ایجنڈے کا بیان دیا جاتا ہے، کشمیر کو 3 حصوں میں تقسیم کرنے کا فارمولا عمران خان نے پیش کیا، بھارت نےمقبوضہ کشمیر کی متنازع حیثیت ختم کرکے اسےشامل کرلیا، گلگت بلتستان میں بھی اسٹیک ہولڈر کو اعتماد میں نہیں لیا جارہا،  گلگت بلتستان جموں و کشمیر کا حصہ ہے۔

Back to top button