پاکستان

تعلیم کانفرنس میںاسکول وکالج کھلےرکھنےکا فیصلہ

بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس میں کورونا کی دوسری لہر کے باوجود تعلیمی ادارے کھلے رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی صدارت میں بین الصوبائی وزرائےتعلیم کانفرنس کا اہم اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبائی اورآزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے وزرائے تعلیم اورحکام نے ویڈیولنک کےذریعےشرکت کی۔ وزرائے تعلیم کانفرنس میں تین نکاتی ایجنڈے کورونا کی صورتحال، موسم سرما کی تعطیلات اورتعلیمی سال اپریل سے اگست منتقل کرنے پرمشاورت ہوئی۔

وزرائےتعلیم کانفرنس میں تعلیمی ادارے کھلےرکھنےکا فیصلہ کیا، شرکا نےاتفاق کیا کہ موجودہ صورتحال میں تعلیمی اداروں کوبند کرنےکی ضرورت نہیں، تعلیمی سال اپریل کےبجائےاگست سےشروع کرنےپرکوئی حتمی فیصلہ نہ ہوسکا۔ شرکا نےموسم سرما کی تعطیلات معمول سےکم کرنے،آئندہ اجلاس دسمبرکےپہلےہفتےمیں بلانے اوراس میں تعلیمی سال بڑھانےسےمتعلق مزید گفتگوپراتفاق کیا ہے۔

اجلاس سے قبل ایک تقریب کے دوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے شفقت محمود کا کہنا تھا کہ اچھی یونیورسٹی صرف عمارت سے نہیں بنتی بلکہ اس کے لیے بہترین اساتذہ اور سہولیات کی ضرورت ہوتی ہے، تعلیمی معیار میں بہتری کے لئے کوششیں کر رہے ہیں۔ تعلیمی ادارے بند ہونے سے بہت نقصان ہوا، فی الحال اسکول بند کرنے کی نوبت نہیں آئی، وزارت صحت کی ایڈوائزری ہمارے لیے مقدم ہے، وزارت صحت سے ایڈوائس آنے تک تعلیم کا سلسلہ جاری رہے گا۔

Back to top button