پاکستان

کورونا کی دوسری لہر، شادی ہالز کے اندر تقریبات پر پابندی عائد

آؤٹ ڈور شادی تقریبات میں ہزار سے زائد افراد کی شرکت ممنوع ہوگی جبکہ ایس او پیزپر سختی سے عمل درآمد بنانا لازمی ہوگا

کورونا وائرس کے روک تھام کیلئے بنائے گئے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی)نے ہالز کے اندر (اِن ڈور)شادی کی تقریبات پر 20 نومبر سے 31جنوری 2021ء تک پابندی عائد کردی۔

ملک میں کورونا وائرس کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر این سی او سی نے اہم فیصلے کیے ہیں اور اسٹیج ٹو کے تحت ماسک کا استعمال نہ کرنے پر 100 روپیہ جرمانہ عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ این سی او سی کے مطابق اِن ڈور شادی کی تقریبات پر 20 نومبر سے 31جنوری 2021 تک پابندی عائد کردی گئی ہے۔ این سی او سی کا کہنا ہے کہ آؤٹ ڈور شادی تقریبات میں ہزار سے زائد افراد کی شرکت ممنوع ہوگی جبکہ شادی کی تقریبات میں ضابطہ کار (ایس او پیز) پر سختی سے عمل درآمد بنانا لازمی ہوگا۔

کورونا کی روک تھام کے ادارے نے سرکاری و نجی دفاتر میں 50 فیصد عملے کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سرکاری و نجی دفاتر میں 50 فیصد عملہ کام کرے گا اور باقی گھر سے کام کریں گے۔ این سی اوسی کے مطابق فیصلوں پرعملدرآمد 7 نومبر سے شروع ہوگا اور 31جنوری 2021 تک جاری رہے گا۔

این سی او سی نے بتایا کہ کراچی، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی اور ملتان زیادہ متاثرہ شہروں میں شامل ہیں جبکہ حیدر آباد، گلگت، مظفرآباد، میر پور، پشاور، کوئٹہ، گوجرانوالا، گجرات، فیصل آباد، بہاولپور اور ایبٹ آباد میں بھی حکمت عملی کا اطلاق کیا جائے گا۔ این سی او سی کے مطابق حکمت عملی کے تحت گلگت بلتستان ماڈل کو اپنایا جائے گا اور اسٹیج 2 کے تحت ماسک کا استعمال نہ کرنے پر 100 روپیہ جرمانہ عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

Back to top button