پاکستان

پی ڈی ایم کا جلسہ لاہور،مسلم لیگ نون کارہنماؤںکوتہلکہ خیزحکم

پاکستان مسلم لیگ ن نےاپنےتمام رہنماوں کوضمانت قبل ازگرفتاری کرانےکی ہدایت کردی

خواجہ عمران نذیرکی گرفتاری،پاکستان مسلم لیگ ن نےاپنےتمام رہنماوں کوضمانت قبل ازگرفتاری کرانےکی ہدایت کردی پارٹی ذرائع کےمطابق پاکستان مسلم لیگ ن نےتیرہ دسمبرکولاہورمیں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کےپلیٹ فارم سےہونےوالےجلسےکے تناظرمیں مقدمے میں نامزد تمام لیگی رہنماوں کوضمانتیں کروانےکی ہدایت کردی یے۔ 11 اگست کوپارٹی کی نائب صدرمریم نوازکی ریلی کی شکل میں نیب میں پیشی کےموقع پرلیگی کارکنوں اورپولیس میں ہونے والی تصادم کے بعد تھانہ چوہنگ میں پولیس نےلیگی رہنماوں و کارکنوں سمیت 300 نامعلوم افراد کیخلاف مقدمہ درج کیا تھا اور مقدمے میں لیگی رہنماوں کی گاڑیوں کا بھی ذکر کیا گیا تھا۔ اس مقدمے میں رانا ثناء اللہ اور کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر سمیت 32 لیگی رہنماوں و کارکنوں نے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت سے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کی جسے بعد میں عدالت نے کنفرم کر دیا تھا۔

پولیس نےہفتہ 7 نومبرکولنک روڈ ماڈل ٹاون سےمسلم لیگ ن لاہورکےجنرل سیکرٹری خواجہ عمران نذیرکوگرفتارکیا تھا اوران کی گاڑی کو بھی قبضےمیں لےلیا تھا۔ خواجہ عمران نذیرکی گرفتاری کےبعد پارٹی نےاس مقدمےمیں نامزد تمام لیگی رہنماوں اورمتحرک کارکنوں کو ہدایت کی ہےکہ وہ فوری طورپراس مقدمے میں اپنی عبوری ضمانت کروا لیں تاکہ آئندہ ماہ ہونےوالےپی ڈی ایم کےجلسےکوناکام بنانےکی حکومت کی کوششوں کا ناکام بنایا جا سکے۔ اس سلسلےمسلم لیگ ن کےرہنما علی پرویز،چوہدری شہباز،غزالی سلیم بٹ سمیت دیگرلیگی رہنما آج کل انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت سےرجوع کرکےاپنی عبوری ضمانتیں کروائیں گے۔

Back to top button