پاکستان

اسٹیبلشمنٹ نے اپوزیشن اتحاد کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے غلطیاں سدھارنے کے لئے بھی تیار، انصار عباسی نے اندر کی خبر دیدی

حفاظتی اسٹیبلشمنٹ کو احساس ہے کہ تمام اداروں نے ماضی میں غلطیاں کی ہیں لہذا سب کو ماضی سے سیکھنا چاہئے

سینئر صحافی انصار عباسی نے دعوی کیا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ نے اپوزیشن اتحاد کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے ہیں اور غلطیاں سدھارنے کے لئے بھی تیار ہو گئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر ایسا ہوا تو اس سے تمام ادارے اپنی ماضی کی غلطیوں سے سیکھیں گے اور ایک ایسا روڈ میپ تیار کر سکیں گے جس سے پاکستان کے بہتر مستقبل کیلئے ماضی کی غلطیوں کو دہرایا نہیں جائے گا۔اس ذریعے کا اسٹیبلشمنٹ سے قریبی رابطہ ہے۔ اس ذریعے نے بتایا ہے کہ حفاظتی اسٹیبلشمنٹ کو احساس ہے کہ تمام اداروں نے ماضی میں غلطیاں کی ہیں لہذا سب کو ماضی سے سیکھنا چاہئے اور اپنی غلطیوں کا ازالہ کرنا چاہئے تاکہ عوام اور ملک کی بہتری ہو۔تاہم، یہ واضح نہیں کہ اداروں کے مابین مذاکرات کیلئے شروعات کون کرے گا۔ آزاد مبصرین کی رائے ہے کہ یہ کام وزیراعظم عمران خان کو کرنا چاہئے جو یہ اقدام کریں لیکن وہ بدستور اپنے سیاسی مخالفین کی جانب جارحانہ رویہ رکھے ہوئے ہیں حتی کہ قومی مفاد کے حامل معاملات پر بھی مذاکرات کیلئے ان کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں۔نواز شریف، جنہوں نے حال ہی میں آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کیخلاف جارحانہ موقف اختیار کیا،نے کئی لوگوں کو حیران و پریشان کر دیا اور ملک کی سیاسی صورتحال کیلئے خطرے کی گھنٹی بجا دی کہ نظام کیلئے خطرات پیدا ہوئے۔ لیکن وہ بھی با معنی مذاکرات کیلئے رضامند ہیں۔

Back to top button