پاکستان

ملک بھر میں نیا پاکستان ہاؤسنگ پراجیکٹس کے حوالے سے ایک بار پھر عوام کو بیوقوف بنانے کی تیاریاں عروج پر پہنچ گئیں

جیسے جیسے آپ قسط کی ادائیگی کرتے جائیں گے آپ کی جانب سے گھر کے لیے دی جانے والی مالیت بیس فیصد سے بڑھتی جائے گی

ملک بھر میں نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم پراجیکٹس کے حوالے سے ایک بار پھر عوام کو بیوقوف بنانے کی تیاریاں عروج پرپہنچ گئی ہیں جبکہ حتمی تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر عشرت حسین نے بتایا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم پراجیکٹ کے تحت 20 فیصد ڈان پیمنٹ پر شہری گھر کے مالک بنیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے جو آپ کا گھر کا کرایہ جا رہا تھا اب وہ آپ کے گھر کی قسط ہو گی۔ جیسے جیسے آپ قسط کی ادائیگی کرتے جائیں گے آپ کی جانب سے گھر کے لیے دی جانے والی مالیت بیس فیصد سے بڑھتی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ گھر لینے کی شرائط بہت آسان ہیں اور گھر لینے والا شخص گھر کا کرایہ بینک قسط کی صورت میں ادا کرے گا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق نیا پاکستان ہاسنگ اسکیم پراجیکٹس کے تحت ایک مکان کی قیمت 22 سے 23 لاکھ روپے ہو گی۔

وفاقی حکومت ایک لاکھ مکانوں کے لیے تین لاکھ روپے فی مکان سبسیڈائز کررہی ہے، تیس ارب کی سبسڈی ہے، یعنی پانچ لاکھ بیس ہزار روپے اس شخص کے اکانٹ میں آجائے گا۔ 17 لاکھ روپے کا اس شخص کو قرضہ ملے گا اور قرضے کی اقساط تب شروع ہوں گی جب وہ گھر میں رہائش پذیر ہو جائے گا، اقساط آٹھ سے دس ہزار روپے ماہوار ہوں گی۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ تعمیراتی شعبے میں ہونے والی ترقی ملکی معیشت کو بڑا سہارا دے گی۔ نادرا نے اس ضمن میں رجسٹریشن کا عمل بھی شروع کر دیا ہے جس کے تحت شہری جلد از جلد اس پراجیکٹ میں اپنی رجسٹریشن کروانے کا عمل شروع کر سکتے ہیں۔

متعلقہ خبریں