پاکستان

عسکری قیادت سے ملاقاتیں کرنے والے مسلم لیگ ن کے رہنماء نے اداروں کیخلاف ایک اور سنسنی خیز دعویٰ کر دیا

دو سال سے جب سے ہم نے موقف اختیار کیا ہے کہ ہمارے خلاف جو کیسز بنے ہیں، ہم ایک فاشست حکومت میں رہے ہیں

پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کے ترجمان محمد زبیر کا کہنا ہے کہ مجھے اور میرے اہلخانہ کا تعاقب کیا جا رہا ہے۔اور ہمیں ڈرایا دھمکایا جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کے ترجمان محمد زبیر نے کہا کہ دو سال سے جب سے ہم نے موقف اختیار کیا ہے کہ ہمارے خلاف جو کیسز بنے ہیں، ہم ایک فاشست حکومت میں رہے ہیں۔سابق گورنر سندھ نے مزید کہا کہ اگر کوئی فائل نہیں کھل سکتی تو ہر طرح سے ڈرایا دھمکا اور ترغیبات دینے کی بات کی جا رہی ہے۔ میں لاہور جاتا ہوں تو وہاں بھی میرا تعاقب کیا جاتا ہے۔اور کہا جاتا ہے کہ نام کیوں نہیں لیتے، مجھے کہا جاتا ہے جو لگ دھمکیاں دیتے ہیں ان کو نام لینا چاہئیے۔ میرا یہی موقف ہے کہ اور میں یہی کہتا ہوں کہ ہمارے مختلف فیملی ممبرز کو چاہے وہ نیب ہو، کورٹ کچہری ہو اور چاہے پی ٹی آئی کی حکومت ہے، ہمیں ان سے سیاسی طور لڑنے دیا جائے۔

واضح رہے کہ محمد زبیر کا شمار ن لیگ کے اہم رہنماں میں ہوتا ہے۔ سابق گورنر سندھ محمد زبیر کو نواز شریف اور مریم نواز کا ترجمان مقرر کیا گیا تھا۔ مسلم لیگ ن نے پارٹی کی مرکزی ترجمان او سینٹرل انفارمیشن سیکرٹری کی سربراہی میں سپوکس پرسنز کمیٹی تشکیل دی تھی۔مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ محمد زبیر پارٹی قائد اور مریم نواز سے متعلق ترجمانی کی ذمہ داری انجام دیں گے۔ س ماضی میں اس طرح کی افواہیں گردش کرتی رہیں کہ محمد زبیر نے نواز شریف کے نمائندے کی حیثیت سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔ جس کے بعد محمد زبیر کئی دنوں تک خبروں کی زینت بھی بنے رہے۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور سابق گورنر سندھ زبیر عمر کی جانب سے ڈی جی آئی ایس پی آر بابر افتخار اور ڈی جی آئی ایس آئی پر سنگین الزامات عائد کیے گئے تھے۔ رہنما ن لیگ نے الزام عائد کیا کہ ان کی آرمی چیف سے ملاقات کے حوالے سے ڈی جی آئی ایس پی آر نے آدھا سچ اور آدھا جھوٹ بولا۔ کوئی مانے یا نہ مانے پر آرمی چیف جنرل قمر باجوہ سے 40 سال پرانے تعلقات ہیں۔ ان سے ملاقات کے دوران این آر او سے متعلق کوئی بات نہیں ہوئی تھی۔

Back to top button