پاکستان

زرداری نے نوازشریف کے لئے ناقابل یقین پیغام پہنچا دیا، حکومت ہل کر رہ گئی‘ اپوزیشن اتحاد فراٹے بھرنے لگا، کامیابی کے لئے اگلا قدم کیا ہوگا؟ رپورٹ آگئی

آنے والے دنوں میں اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کی طرف سے حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے شروع کی گئی تحریک مزید زور پکڑے گی

سابق صدر آصف علی زرداری اور مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کے درمیان اہم پیغامات کے تبادلے ہوئے جس کے بعد حکومت ہل کر رہ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق تجزیہ کار و صحافی عمران یعقوب خان کہا کہ مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز اور چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی گلگت بلتستان میں واقع سیرینا ہوٹل میں ہونے والی ملاقات میں سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزیراعظم نوازشریف کی طرف سے ایک دوسرے کے لیے بھیجے گئے پیغامات کا تبادلہ کیا گیا، جن کی روشنی میں اس ملاقات میں طے پایا کہ مستقبل میں ساتھ چلا جائے گا جس کی بنیادی حکمت عملی پر بھی ملاقات میں تبادلہ خیال کیا گیا، جس کی بنیاد آنے والے دنوں میں اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی طرف سے حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے شروع کی گئی تحریک مزید زور پکڑے گی۔

بتایا گیا ہے کہ مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے بلاول بھٹو زرداری سے ملاقات میں نوازشریف کی صاحبزادی نے چیئرمین پیپلزپارٹی سے شکوہ کیا کہ سنا ہے آپ آئی جی سندھ کے اغوا کی انکوائری رپورٹ سے مطمئن ہیں جس پر بلاول نے کہا کہ مخالفین پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ میں دراڑ ڈالنے کے لیے سرگرم عمل ہیں۔ میڈیا ذرائع کے مطابق دونوں رہنماوں کے درمیان ملاقات 20 منٹ تک جاری رہی جس میں پی ڈی ایم اتحاد اور آئی جی سندھ اغوا انکوائری پر بات چیت ہوئی، ملاقات میں بلاول بھٹو زرداری اور مریم نواز کے درمیان سابق وزیراعظم نواز شریف کے ٹوئٹ کے معاملے پر تفصیلی طور تبادلہ خیال کیا گیا، بلاول بھٹو نے مریم نواز کو سابق وزیراعظم کے ٹوئٹ پر پیپلز پارٹی کے تحفظات سے آگاہ کیا، جس کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف نے درست موقف اپنایا، سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کا ایک ہی بیانیہ ہے۔

متعلقہ خبریں