پاکستانفیچرڈ پوسٹ

میاں نوازشریف کا جارحانہ رویہ، عمران خان کے لئے سب سے بڑی پریشانی، آئندہ حکمت عملی کیا ہوگی؟ تہلکہ خیز انکشاف سامنے آگیا

اب تک مسلم لیگ کا قائم رہنا اور بڑے بڑے جلسے اور میاں صاحب کا غیر لچکدار رویہ خان صاحب کیلئے کچھ نہ کچھ سوچنے کیلئے کافی ہے

مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد میاں نوازشریف کا جارحانہ رویہ وزیراعظم عمران خان کے لئے سب سے بڑی پریشانی بن گئی اور آئندہ حکمت عملی کیا ہوگئی اس حوالے سے تہلکہ خیز انکشاف سامنے آیا ہے۔

کھوج نیوز ذرائع کے مطابق ظاہر ہے جب آدمی وزیراعظم ہوتا ہے تو وہ بات کو ایک کان سے سنتا ہے اور دوسرے سے نکال دیتا۔ ویسے تو ہماری سیاست میں کوئی بات بھی حرف آخر نہیں مگر بظاہر میاں صاحب کی واپسی اتنی ہی ناممکن ہے جتنی الطاف حسین کی۔مگر اب تک مسلم لیگ کا قائم رہنا اور بڑے بڑے جلسے اور میاں صاحب کا غیر لچکدار رویہ خان صاحب کیلئے کچھ نہ کچھ سوچنے کیلئے کافی ہے۔ اگر یہ تحریک اشاروں پر نہیں چل رہی تو اس کا ٹارگٹ بھی عمران خان نہیں ہیں۔ یہ کچھ کچھ مجھے ایم آر ڈی یا تحریک بحالی جمہوریت کی طرح کا اتحاد نظر آرہا ہے۔ بہتر ہے کہ وزیراعظم مسائل کو پارلیمنٹ میں لے جائیں اور پارلیمانی طریقے سے مذاکرات کا آغاز کریں۔ اپنا ایجنڈا اپوزیشن کو بھیجیں، PDM اگر انکار کرتی ہے اور کوئی غیر آئینی اقدام کی طرف صورتحال کو لے جاتی ہے تو یہ خطرے کی گھنٹی جس کا آخر میں الزام مجموعی طور پر سیاستدانوں پر ہی آئے گا اور کوئی بھی جمہوری سوچ رکھنے والا شخص ایک اور 5جولائی 1977 نہیں چاہتا۔

Back to top button