پاکستانفیچرڈ پوسٹ

چار امیدواروں نے اپنا وزن پیپلز پارٹی کے پلڑے میں ڈال دیا’ بلاول بھٹو سرگرم، پاکستان تحریک انصاف کے خواب بکھرنے لگے

یہ چاروں امیدوار تحریک انصاف کے ٹکٹ کے امیدوار تھے جو ٹکٹ نہ ملنے پر آزاد حیثیت سے الیکشن لڑ کر جیتے ہیں

4 آزاد نومنتخب نمائندوں نے پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کے لیے رابطہ کر لیا جس کے بعد بلاول بھٹو سرگرم اور پاکستان تحریک انصاف کے خواب بکھرنے لگے ہیں۔

ذرائع کے مطابق گلگت بلتستان سے کامیاب ہونے والے 4 آزاد نو منتخب نمائندوں نے پیپلز پارٹی کی صوبائی قیادت سے رابطہ کر لیا ہے۔باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ چاروں نے پی پی میں شامل ہو کر حکومت بنانے کی تجویز دی ہے۔ پیپلز پارٹی کی صوبائی قیادت نے فوری طور پر مرکزی قیادت تک پیغام پہنچا دیا ہے۔یہ چاروں امیدوار تحریک انصاف کے ٹکٹ کے امیدوار تھے جو ٹکٹ نہ ملنے پر آزاد حیثیت سے الیکشن لڑ کر جیتے ہیں۔ادھر پیپلز پارٹی کے ساتھ رابطے کی خبر نے تحریک انصاف کے حلقوں میں ہلچل مچا دی ہے۔عین ممکن ہے کہ آزاد امیدواروں کی پی پی جوائن کے بعد تحریک انصاف کا گیم نمبر پی پی پی سے پیچھے چلا جائے کیونکہ پیپلز پارٹی کو ہم خیال جماعتوں جن میں سر فہرست ن لیگ، جے یو آئی کی بھی حمایت حاصل ہے۔جب کہ جی بی کے باشعور عوام نے حالیہ انتخابات میں لوٹا کریسی کی سیاست کو شکست دے دی۔پارٹیاں بدلنے والے اعلی سیاسی شخصیات کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔کئی سیاستدانوں کی سیاست دا پر لگ گئی۔بڑے بڑے برج الٹ گئے جن میں قابل ذکر حاجی فدا محمد ناداش ، وزیر حسن ، ابراہیم ثنائی قابل ذکر ہیں۔

سابق رکن صوبائی اسمبلی و پیپلز پورٹی کے رہنما عمران ندیم کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہار جیت سیاست کا حصہ ہے۔تمام چاہنے والوں اور ووٹرز کا خصوصی شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے مجھے سپورٹ کیا۔واضح رہے کہ گلگت بلتستان انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف نے پہلی، آزاد امیدواروں نے دوسری اور پیپلز پارٹی نے تیسری پوزیشن حاصل کی جبکہ مسلم لیگ ن چوتھی پوزیشن پر رہی۔ گلگت بلتستان الیکشن میں پاکستان تحریک انصاف 9، آزاد امیدوار 7 نشستوں پر کامیاب رہے جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی 4، ایم ڈبلیو ایم 1 اور مسلم لیگ ن 2 نشستیں جیتنے میں کامیاب ہو سکی۔

Back to top button