پاکستانفیچرڈ پوسٹ

جماعۃ الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید احمد کے خلاف نیا قدم اٹھا لیا گیا‘ ایسی سزا سنا دی گئی کہ مولانا فضل الرحمن بھی سوچ میں پڑ جائیں گے

انسداد دہشت گردی عدالت نے کالعدم جماعۃ الدعوۃ کے سربراہ پروفیسر حافظ محمد سعید کو مزید ساڑھے 10 سال قید کی سزا سنا دی

جماعۃ الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید احمد کے خلاف نیا قدم اٹھا لیا گیا، ان کو ایسی سزا سنا دی گئی کہ جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن بھی سوچ میں پڑ جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق انسداد دہشت گردی عدالت نے کالعدم جماعۃ الدعوۃ کے سربراہ پروفیسر حافظ محمد سعید کو قید کی سزا سنا دی۔ لاہور میں جج ارشد حسین بھٹہ کی عدالت نے سی ٹی ڈی کی طرف سے درج مقدمہ نمبر 16/19 اور 25/19 پر فیصلہ سناتے ہوئے حافظ سعید سمیت چار افراد کو 2 مقدمات میں قید کی سزائیں سنائیں۔ حافظ محمد سعید، پروفیسر ظفر اقبال اور یحییٰ مجاہد کو ساڑھے دس، دس سال کی سزا سنائی جبکہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی کو 6 ماہ قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

پروفیسر حافظ محمد سعید جولائی 2019 سے گرفتار ہیں اور ان کیخلاف اب تک چار مقدمات کے فیصلے سنائے جا چکے ہیں۔ جماع الدعو کے رہنماں کے خلاف سی ٹی ڈی کی طرف سے کل 41 مقدمات درج ہیں جن میں سے 24 مقدمات کے فیصلے ہو چکے ہیں جبکہ باقی اے ٹی سی عدالتوں میں زیرسماعت ہیں۔ حافظ سعید کو اس سے قبل رواں سال 12 فروری کو جج ارشد حسین بھٹہ نے ہی دو کیسز میں 11 سال قید اور 30 ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی۔

Back to top button