پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پی ڈی ایم ٹوٹ پھوٹ کا شکار، پیپلز پارٹی اور اسٹیبلشمنٹ میں ڈیل پکی ہو گئی‘ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے اپوزیشن اتحاد کو خیر باد کہہ دیا

آصف زرداری کا یہ ماننا ہے کہ جلسے جلوسوں سے کچھ نہیں ہونے والا، اپوزیشن کی یہ خوشی وقتی ہے، ہمیں آگے بڑھ کر کچھ سوچنا ہوگا

پی ڈی ایم ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے لگی، پیپلز پارٹی اور اسٹیبلشمنٹ کے درمیان ڈیل پکی ہو گئی ہے جس کے بعد پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے اپوزیشن اتحاد کو خیر باد کہہ دیا۔

تفصیلات کے مطابق اپنے وی لاگ میں مبشر لقمان کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمان اور آصف زرداری کی جب ملاقات ہوئی تو سابق صدر نے اظہار ناراضگی کیا، کیونکہ آصف زرداری کا یہ ماننا ہے کہ جلسے جلوسوں سے کچھ نہیں ہونے والا، اپوزیشن کی یہ خوشی وقتی ہے، ہمیں آگے بڑھ کر کچھ سوچنا ہوگا۔ مبشر لقمان کا یہ کہنا تھا کہ اس وقت اپوزیشن کے پاس صرف دو ہی راستے ہیں، ایک تو وہ اسمبلیوں سے مستعفی ہوجائیں لیکن وہ اسیا کرنا بھی نہیں چاہتے، سب ہی جانتے ہیں دوبارہ منتخب ہونے کے لیے پیسہ پانی کی طرح بہانا پڑتا ہے، بار بار ایک ہی حلقے سے الیکشن جیتنا کسی بھی سیاستدان کے لیے صرف ایک برا خواب ہی ہوتا ہے اس لیے اس آپشن پر غور کرنا یا سوچنا ذرا مشکل ہے۔

مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ اس وقت پیپلز پارٹی پی ڈی ایم کے راستے میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے کیونکہ انہوں نے اگر سندھ کو چھوڑ دیا تو انکی کارکردگی اتنی اچھی نہیں ہے کہ سندھ کی عوام انہیں پھر موقع دے صرف نواز شریف اور فضل الرحمان کی خواہش ہے کہ اسمبلیوں سے مستعفی ہوجائیں۔ مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ دوسرا راستہ یہ بھی ہے کہ اپوزیشن ایک لانگ مارچ کرے، لیکن اس میں بھی مسئلہ یہ ہے کہ جیسا دھرنا عمران خان یا طاہر القادری دے چکے ہیں اپوزیشن کے بس کی بات نہیں کہ ایسا دھرنا یا لانگ مارچ کریں کیونکہ عمران خان اور طاہرالقادری اتنے دن دھرنا دے کر بھی حکومت گرانے میں کامیاب نہیں ہو سکے تھے۔

متعلقہ خبریں