پاکستانفیچرڈ پوسٹ

نوازشریف کے دور میں کس نامور سیاستدان نے اسرائیل کاسرکاری دورہ کیا؟ تمام کرداروں کے نام سامنے آنے کے بعد نئی بحث چھڑ گئی

1998ء میں اجمل قادری نے خود فلسطین و اسرائیل کا سرکاری دورہ کیا تھا‘ آزاد کشمیر کے وزیراعظم سردار عبدالقیوم سمیت دیگر لوگ بھی شامل تھے

سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کے دور میں کس نامور سیاستدان نے اسرائیل کا سرکاری دورہ کیا؟ ان کرداروں کے نام سامنے آنے کے بعد نئی بحث چھڑ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نامور سیاستدان مولانا اجمل قادری نے انکشاف کیا ہے کہ 1998ء میں میاں نواز شریف کے دور میں انہوں نے خود فلسطین و اسرائیل کا سرکاری دورہ کیا تھا۔ ان کے ساتھ اس وفد میں آزاد کشمیر کے وزیر اعظم سردار عبدالقیوم سمیت دیگر لوگ بھی شامل تھے۔ مولانا اجمل قادری نے اپنے اس دورے کی تفصیلات اور تصاویر سوشل میڈیا پر شیئر کیں۔ ان میں سے ایک تصویر میں انہیں اس وقت کے فلسطینی صدر یاسر عرفات کے ساتھ دیکھا جاسکتا ہے۔ ایک تصویر میں وہ قب الصخرا کے قریب نظر آرہے ہیں جبکہ ایک تصویر میں وہ کسی کانفرنس میں شریک ہیں۔نجی ٹی وی سما سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا اجمل قادری نے دعوی کیا کہ جب وہ اسرائیل جا رہے تھے تو وزارت خارجہ کے لوگوں کے علم میں یہ بات تھی اور انہوں نے اس وقت کے وزیر اعظم نواز شریف کو بھی آگاہ کیا۔ اس وقت وزیر خارجہ سرتاج عزیز تھے انہیں بھی بتایا گیا ہوگا کہ ہم اسرائیل جا رہے تھے۔مولانا اجمل قادری کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان سے اردن اور پھر وہاں سے مغربی کنارہ کراس کرکے غزہ گئے۔ وہ دو دن یاسر عرفات کے مہمان رہے اور اس کے بعد اسرائیلی دارالحکومت یروشلم کے ایک ہوٹل میں چار راتیں گزاریں، انہیں وہاں صدارتی سوئیٹ دیا گیا تھا۔اجمل قادری نے یہ بھی انکشاف کیا کہ اس وقت کے وزیر اعظم نواز شریف کے پرنسپل سیکرٹری سعید مہدی اسرائیل میں اہم ملاقاتیں طے کرتے تھے۔

متعلقہ خبریں