پاکستانفیچرڈ پوسٹ

فوج کا سیاست میں کردار ادا کرنے سے دوٹوک انکار‘ اپوزیشن جماعتوں اور عمران خان کو مشورہ دے دیا گیا

اگر جمہوریت کو آگے لے کر چلنا ہے تو پھر سیاسی فریقین کو لچک کا مظاہرہ کرنا ہوگا، تمام جماعتوں کو اپنے اپنے فیصلوں پر نظر ثانی کرنی ہوگی

فوج نے سیاست میں کردار ادا کرنے سے دو ٹوک انکار کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں اور وزیراعظم عمران خان کو مشورہ بھی دے دیا ہے جس کے بعد نئی ہلچل مچ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق دفاعی تجزیہ کار شہزاد چوہدری کا کہنا تھا کہ اگر معاملات ایسے ہی چلتے رہے۔ عمران خان اور انکی حکومت قائم رہی تو پھر دو سالوں بعد منظرنامہ مختلف ہوگا، صرف مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی باقی رہے گی، اپوزیشن کا کچھ بھی باقی نہیں رہنا، فوج کی کوشش ہوتی ہے کہ ہمیشہ منتخب حکومت کے ساتھ ایک پیج پر ہو۔ شہزاد چوہدری کا کہنا تھا کہ فوج نے ہمیشہ منتخب حکومت کا ساتھ دیا ہے سوائے اس کے کہ اگر حکومت کی جانب سے ایسے اقدامات نہ کیے گئے ہوں کہ فوج اور ملک کی بدنامی شروع ہوجائے، فوج پابند ہوتی ہے اور موجودہ حکومت کے ساتھ مل کر ہی چلتی ہے۔

متعلقہ خبریں