پاکستان

نوازشریف کا پاسپورٹ ختم ہوگا تو کیا ہوگا؟ سابق وزیراعظم برطانیہ میں قیام کر سکیں گے یا نہیں؟ دھواں دھار خبر منظر عام پر آگئی

حکومت کا 16 فروری کو پاسپورٹ منسوخ کرنیکا فیصلہ‘ نواز شریف کے پاس لندن میں قیام جاری رکھنے کے بہت سے طریقے ہیں: امیگریشن ماہرین

مسلم لیگ ن کے قائد میاں نوازشریف کا پاسپورٹ ختم ہوگا تو کیا ہوگا؟ سابق وزیراعظم برطانیہ میں قیام کر سکیں گے یا نہیں؟ دھواں دھار خبر منظر عام پر آگئی۔

تفصیلات کے مطابق حکومت نے 16 فروری کو نوازشریف کا پاسپورٹ منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے لیکن امیگریشن ماہرین کا کہنا ہے کہ نوازشریف کے پاس لندن میں قیام جاری رکھنے کے بہت سے طریقے ہیں جس کے تحت وہ پناہ کی درخواست دیے بغیر بھی لندن میں مقیم رہ سکتے ہیں اورکسی ملک کی شہریت نا ہونے کا دعوی بھی کرسکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق حکومت پاکستان نے اعلان کیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کا پاسپورٹ موجودہ معیاد پوری ہونے پر ڈیڑھ ماہ بعد 16 فروری کو منسوخ کردیا جائے گا جب کہ اس کی تجدید نا کرنے کا بھی عندیہ دیا گیا ہے۔ وزیرداخلہ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ہم نے 16 فروری کو نوازشریف کا پاسپورٹ منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سے قبل وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور بابر اعوان نے بھی پریس کانفرنس کرکے کہا تھا کہ پاسپورٹ کی معیاد ختم ہوجانے پر نوازشریف کا لندن میں قیام غیرقانونی ہوجائے گا، ان کے پاس واحد راستہ پاکستان واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنا اور لگائے گئے الزامات کا دفاع کرنا ہے۔

متعلقہ خبریں