پاکستانفیچرڈ پوسٹ

دہشت گردی کے خلاف جنگ، عمران خان نے فوج کی مخالفت کیوں کی؟ جلسے جلوس اور دھرنوں کا سلسلہ کس نے شروع کیا؟ سلیم صافی نے بتا دیا

عمران خان جن کو وزیراعظم کے منصب سے سرفراز کیا گیا ہے، بڑے فخر سے عالمی فورمز پر بھی کہتے ہیں کہ وہ اس جنگ کے خلاف تھے اور ہیں

سینئر صحافی سلیم صافی نے بتایا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں عمران خان نے فوج کی مخالفت کیوں کی، جلسے، جلوس اور دھرنوں کا سلسلہ کس نے شروع کیا ہے؟

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی سلیم صافی کا کہنا ہے کہ امریکہ، یورپ اور باقی دنیا کے سامنے پاکستان کا کیس یہی ہے کہ وہ اس جنگ میں پاکستانی فوج اور قوم کی قربانیوں کو تسلیم کرے۔ لیکن عمران خان صاحب، جنہیں اب وزیراعظم کے منصب سے سرفراز کیا گیا ہے، بڑے فخر سے عالمی فورمز پر بھی کہتے ہیں کہ وہ اس جنگ کے خلاف تھے اور ہیں۔ اپنی کتاب میں انہوں نے اس جنگ کی جگہ جگہ پرزور مذمت کی ہے۔ کہیں لکھا ہے کہ یہ جنگ امریکی ڈالروں کے لئے لڑی گئی۔ کہیں لکھا ہے کہ امریکیوں کو خوش کرنے کے لئے فوج نے اپنے لوگوں پر بمباری کی۔ کہیں لکھا ہے کہ فوج کے مظالم اور بمباریوں کی وجہ سے پاکستان میں طالبان پیدا ہوئے۔ دوسری طرف اس جنگ میں فوج کے شانہ بشانہ لڑتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی نے ہزاروں کارکنوں اور سینکڑوں رہنماؤں کی قربانی دی۔ اسفندیارولی خان سے لے کر ضلعی عہدیداروں تک نے خودکش حملوں کا سامنا کیا لیکن عمران خان کہہ رہے ہیں کہ فوج ان کے ساتھ نہیں بلکہ میرے ساتھ ہے اور وہ الزام لگارہے ہیں کہ پی ڈی ایم کا حصہ ہونے کے ناطے اے این پی بھی فوج کو بدنام کرنے والوں میں شامل ہے۔

متعلقہ خبریں