پاکستان

وزیراعظم کا حکم ہوا میں اُڑا دیا گیا ،ٹرین کرایوں میں اضافہ

ریلوے حکام نےڈیزل کی قیمتوں میں اضافےکےبعد امپورٹڈ کوئلےکی ٹرین کےکرایوں میں اضافہ کردیا

وزیر اعظم عمران خان کےویژن کےبرعکس تاجربرادری کوریلف دینےکی بجائےریلوے حکام نےڈیزل کی قیمتوں میں اضافےکا بہانہ بناکرامپورٹڈ کوئلہ کی ٹرین کےکرایوں میں اضافہ کردیا ہے،اس حوالےسےریلوے حکام نوٹیفکیشن بھی جاری کیا ہے۔

نوٹیفکیشن کےمطابق حکومت پاکستان کی جانب سےپیٹرولیم کی قیمتوں میں اضافہ کےبعد ریلوے حکام نےفریٹ ٹرین امپورٹڈ کوئلہ کی قیمتوں میں فی میٹرک ٹن کےحساب سےاضافہ کیا ہے،جوکراچی پورٹ قاسم اوربن قاسم ریلوے اسٹیشن سےیوسف والا ریلوے سٹیشن تک 1060 کلو میٹرکا فاصلہ بنتا ہے،جب کہ ریلوے حکام نےفی کلومیٹر تک کا کرایہ 3 روپےبڑھا کر 826 روپےکےحساب سےمقررکیےہیں، اسی طرح ایک ٹن 4 ہزار55.56  پیسےفی ٹن مقررکیےہیں،جس کےبعد اب 60 ٹن ہاپرویگن کا کرایہ 2 لاکھ 43 ہزار 333 روپے ہوگئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہےکہ اس حوالےسےملک بھرکےڈویژن کونوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے،تاکہ آئندہ سےکوئلہ کا کرایہ اسی تناسب سےلیا جائے گا۔ جب کہ ریلوے حکام کا کہنا ہےاگر پیٹرولیم کی قیمتوں میں کمی ہوتی ہےتواس میں ردوبدل کیا جاسکتا ہے۔ دوسری جانب تاجربرادری کا کہنا ہےکہ کرایوں میں اضافہ زیادتی ہےمعاشی حالات ٹھیک نہیں،حکومت ایک جانب تاجربرادری کوخاطرخواہ ریلف دینےکےدعوے کرتی ہےاوردوسری جانب کسی قسم کا کوئی ریلف نہیں دیا جارہا ہےاوراب کرایہ میں اضافہ موجودہ حالات میں تاجربرادری دشمنی کا ثبوت ہے، حکومت کوچاہیےکہ کرایوں میں کیا جانےوالا اضافہ واپس لیا جائےتاکہ مالی بوجھ نہ بڑھ سکے۔

 

متعلقہ خبریں