پاکستان

عوام کووائی فائی کی سہولت سےمحروم کردیا گیا

پنجاب حکومت نےصوبےبھرمیں بھاری سالانہ سبسڈی کےباعث پنجاب وائی فائی پراجیکٹ بند کر دیا ہے

سال 2017 میں اس وقت کی حکومت نےلاہوروملتان سمیت صوبےکے 200 مقامات پرمفت سہولت فراہم کرنےکیلئےپنجاب وائی فائی منصوبہ شروع کیا تھا، منصوبےکےلئےسالانہ 19 کروڑ 50 لاکھ روپےخرچ آرہا تھا، گزشتہ سال کےشروع میں بھی پی ٹی سی ایل کو واجبات کی عدم ادائیگی پروائی فائی کی سہولت عارضی طورپربند ہوئی تھی،لیکن پھراس سروس کوبحال کردیا گیا تھا۔

حکومت پنجاب کی جانب سےاب ایک بارپھرعوامی مقامات پروائی فائی کی مفت سہولت ختم کردی گئی ہے،سہولت ختم ہونےسےصوبےبھر کےتعلیمی اداروں کےہزاروں طلباء،ریسرچ اسکالرزاورصحافی مفت وائی فائی کی سہولت سےمحروم ہوگئےہیں۔ واضح رہےکہ پنجاب کے یونیورسٹی اورکالجزکےطلبا وطالبات مفت سہولت سےمستفید ہورہےتھے،لاہورپریس کلب میں صحافیوں کےلئےبھی وائی فائی کی مفت سہولت میسرتھی،جب کہ لاہورائیرپورٹ،میٹروبس اسٹیشن،لاہورریلوے اسٹیشن سمیت دیگرپبلک مقامات پرمفت وائی فائی کی سہولت دستیاب تھی۔

متعلقہ خبریں