پاکستان

پورے ملک میں ایسا ماحول بنا دیا گیا ہے کہ سوائے گالیوں اور جھوٹ کے کچھ دکھائی نہیں دے رہا‘ ڈاکٹر عبدالقدیر خان بھی حکومت پر بھڑک اٹھے

اسلام آباد کے مہاراجہ اور لاہور کی مہارانی، لاہور کی راجکماری کی سات پشتوں کو گالیوں سے نوازتے ہیں‘ یہ کلچر پچھلے چار سال میں عروج پر پہنچا ہے

ڈاکٹر عبدالقدیر خان بھی حکومت پر بھڑک اٹھے ہیں کہ پورے ملک میں ایسا ماحول بنا دیا گیا ہے کہ سوائے گالیوں اور جھوٹ کے کچھ دکھائی نہیں دے رہا ہے۔

تفصیلا تکے مطابق پاکستان کے حالات کی وجہ سے تقریبا ہر شخص ہی پریشان ہے اور اب محسن پاکستان ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے بھی اپنے احساسات کا اظہار کردیا اور بتایا کہ ان کی طبیعت بے حد اداس اور چڑچڑی رہتی ہے کہ اللہ پاک ہم لوگوں کو کن گناہوں کی سزا دے رہا ہے؟ ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے کہا ہے کہ "پورے ملک میں ایک ایسا ماحول بنا دیا گیا ہے کہ سوائے گالیاں اور جھوٹ، لغویات کے کچھ سنائی نہیں دیتا۔ اسلام آباد کے مہاراجہ اور لاہور کی مہارانی، لاہور کی راجکماری کی سات پشتوں کو گالیوں سے نوازتے ہیں۔ یہ کلچر پچھلے چار سال میں عروج پر پہنچا ہے۔ نہایت بدقسمتی یہ ہے کہ حکمرانِ وقت نے اِس ٹیم کی کپتانی سنبھالی ہوئی ہے۔ اِن لوگوں کی کارکردگی صفر ہے اور زبانیں سو گز لمبی ہیں۔ وزیراعظم صاحب آپ نے عوام سے لاتعداد وعدے کئے تھے؟ آپ کو یاد ہوں گے؟ محترم وزیراعظم صاحب ایک معمولی سے شہری کی حیثیت سے آپ کو چند باتیں یاد دلانا چاہتا ہوں۔ آپ کی اجازت ہے؟ آپ نے ڈکٹیٹروں کی سخت مخالفت کی تھی مگر مشرف کے ریفرنڈم میں کھل کر اس کی حمایت کی۔ 2۔ ماضی قریب میں آپ نے کہا تھا کہ IMF سے قرض لینے کے بجائے میں خود کشی کر لوں گا۔ 3۔ آپ نے ایم کیو ایم کو ایجنٹ اور غدار وطن کہا تھا، وہ اب آپ کے پیارے ساتھی ہیں۔ 4۔ آپ نے شیخ رشید کو اپنا چپڑاسی بنانے کے قابل بھی نہیں سمجھا تھا، انہیں نہایت اہم عہدہ وزارتِ داخلہ دے دی۔ 5۔ آپ کہتے ہیں کہ جھوٹ بول کر عوام کو گمراہ نہیں کیا جا سکتا، آپ اور آپ کی پارٹی کے کارکنوں کے بعض بیانات جھوٹ پر مبنی نکلے ہیں۔

متعلقہ خبریں