پاکستانفیچرڈ پوسٹ

سینیٹ انتخابات کا معاملہ‘ عمران خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ ق کے آگے گھٹنے ٹیک دیئے؟ چوہدری برادران نے بھی بڑا فیصلہ کرلیا

پی ٹی آئی کی حکومتی اتحاد میں شامل جماعتوں جی ڈی اے، ایم کیو ایم، (ق)لیگ اور بی اے پی کی درپردہ مشاورت جاری ہے

سینیٹ انتخابات کے معاملہ پر عمران خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ ق کے آگے گھٹنے ٹیک دیئے جس کے بعد چوہدری برادران نے بھی بڑا فیصلہ کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق آئندہ ماہ 48 سینیٹرز اپنی مندت مکمل کرکے ریٹائر ہوجائیں گے ان کی جگہ نئے سینیٹرز کا انتخاب عمل میں آئے گا۔ تحریک انصاف کو قومی اسمبلی کی طرح سینیٹ میں بھی اپنی برتری قائم کرنے کے لیے اتحادی جماعتوں کی ضرورت ہے۔ اس سلسلے میں پی ٹی آئی کی حکومتی اتحاد میں شامل جماعتوں جی ڈی اے، ایم کیو ایم، (ق)لیگ اور بی اے پی کی درپردہ مشاورت جاری ہے۔

سینیٹ انتخابات کے حوالے سے مسلم لیگ (ق)کے صوبائی ارکان کے ووٹ انتہائی اہمیت اختیار کرگئے ہیں جب کہ (ق)لیگ کی جانب سے بھی آئندہ چند روز میں بڑا اعلان متوقع ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ چیئرمین سینیٹ کی چیئرین شپ کے لیے بطور امیدوار صادق سنجرانی کے نام پر اتفاق کی صورت میں ڈپٹی چیئرمین پی ٹی آئی کا ہوگا اور اس کے لیے سینیٹر مرزا محمد آفریدی کا نام ڈپٹی چیئرمین کے لئے زیر غور ہے۔ دوسری جانب اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کی جانب سے بھی سینیٹ انتخابات پر مشاورت کا سلسلہ جاری ہے، چیئرمین سینیٹ کے لیے پیپلز پارٹی اپنے امیدوار کا نام پی ڈی ایم کے سامنے رکھے گی جب کہ ڈپٹی چیئرمین کے لئے مسلم لیگ (ن)یا جے یو آئی کے ساتھ مشاورت ہوگی،اتفاق رائے ہونے کی صورت میں متفقہ امیدواروں کا اعلان کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں