پاکستان

براڈشیت کو خریدنے کا معاملہ، سابق صدر آصف علی زرداری کا کردار کیا تھا؟ حقائق مکمل طور پر سامنے آگئے، پاکستان پیپلز پارٹی ہل کر رہ گئی

فاروق ایچ نائیک اور آصف زرداری کے ساتھی راجہ نے ہم سے رابطہ کیا‘فاروق ایچ نائیک نے ہم سے سیٹلمنٹ کی بات کی تھی

براڈ شیٹ کو خریدنے کے معاملہ پر سابق صدر آصف علی زرداری کا کردار کیا تھا اس حوالہ سے حقائق مکمل طور پر سامنے آگئے ہیں جس کے بعد پاکستان پیپلز پارٹی ہل کر رہ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کے لندن میں موجود فلیٹس ایون فیلڈ کے حوالے سے برطانیہ کی براڈ شیٹ کمپنی کے چیف کیوے موسوی نے اہم انکشافات کیے ہیں۔نیب کے خلاف ہرجانے کا کیس جیتنے والی کمپنی براڈ شیٹ کے چیف کیوے موسوی کہا کہ فاروق ایچ نائیک اور آصف زرداری کے ساتھی راجہ نے ہم سے رابطہ کیا۔فاروق ایچ نائیک نے ہم سے سیٹلمنٹ کی بات کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ آپ شہزاد اکبر سے پوچھیں وہ معاملہ کیوں گھما رہے ہیں؟ شہزاد اکبر ہماری کارگردگی پر سوال اٹھا کر عوام کو گمراہ کر رہے ہیں۔میکسیکو سمیت کئی ملکوں میں ہماری تفتیش اور نتائج شاندار رہے۔ہماری شہرت کی وجہ سے ہی ہماری خدمات حاصل کی گئی تھیں۔کاوے موسوی نے کہا کہ پاکستان کو جو شواہد دئے اس پر کارروائی کو آگے بڑھایا جائے۔ 2 ملین ڈالر پر بات کرنے کے بجائے اربوں ڈالر کی ریکوری ہونی چاہئیے۔عدالتی فیصلے سے پہلے سمجھوتے کیوں کیے، انکوائری ضروری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نیب نے براڈ شیٹ کو چھان بین سے روکا اور معاملات تباہ کیے۔ظفر علی نامی شخص کا براڈ شیٹ سے کوئی تعلق نہیں ہے، جج نے تسلیم کیا کہ براڈ شیٹ لوٹی ہوئی دولت کا سراغ لگا رہی تھیں۔سی ای او براڈ شیٹ نے بتایا کہ ہم نے حکومت پاکستان سے تفتیش کا کہا لیکن ہماری نہیں سنی گئی۔ ہمیں دوبارہ تفتیش کے اختیارات دئیے ہی نہیں گئے۔پاکستان میں نئی حکومت ہے اور ہم لوٹی دولت کا سراغ لگا سکتے ہیں۔دوسری جانب براڈ شیٹ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نے اپنے ایک بیان میں پاکستان کی حکومت کو پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کہیں تو ایون فیلڈ کی تحقیقات کریں گے، غیر قانونی اثاثوں کی تحقیق سے پیچھے ہٹنے کے لیے رشوت کی پیشکش کی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button