پاکستان

پنجاب بیورو کریسی کے ساتھ ایک بار پھر ہاتھ کرنے کی تیاریاں کر لی گئیں‘ کون کون سی اہم سرکاری شخصیات پر قیامت ڈھائی جائے گی؟ فیصلہ ہوگیا

پنجاب میں چیف سیکرٹری اور آئی جی پولیس کو تبدیل کرنے کی تیاری مکمل، کلیم امام کو آئی جی اور یوسف نسیم کھوکھر کو چیف سیکرٹری تعینات کیا جائے گا

پنجاب بیورو کریسی کے ساتھ ایک بار پھر ہاتھ کرنے کی تیاریاں کر لی گئیں‘ کون کون سی اہم سرکاری شخصیات پر قیامت ڈھائی جائے گی؟ فیصلہ ہوگیا اور بڑی خبر سامنے آگئی۔

تفصیلات کے مطابق سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید نے کہا کہ کلیم امام کو آئی جی اور یوسف نسیم کھوکھر کو چیف سیکرٹری تعینات کیا جائے گا، پنجاب میں دو کمشنر، پانچ ڈی سی اور چھ سیکرٹری بھی تبدیل کیے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ دوسری خبر یہ ہے کہ پنجاب میں چیف سیکرٹری اور آئی جی سمیت بڑے پیمانے پر تبدیلیاں کی جارہی ہیں، دو کمشنر، پانچ ڈی سی اور چھ سیکرٹری تبدیل کیے جائیں گے۔ تجویز یہ ہے کہ کلیم امام کو آئی جی اور یوسف نسیم کھوکھر کو چیف سیکرٹری بنا دیا جائے۔ ان کو پہلے ہٹا دیا گیا تھا، اب کہا جارہا ہے کہ ان کی پرفارمنس بہتر تھی۔ موجودہ آئی جی اور چیف سیکرٹری کی موجودگی میں پولیس اصلاحات ناممکن ہیں۔

عمران خان نے فیصلہ کیا ہے کہ عثمان بزدار کو رکھنا ہے، عمر شیخ کو بھی ہٹا دیا تھا، کلیم امام بہترین پولیس افسر ہیں۔ نگران حکومت میں کلیم امام نے الیکشن کروایا تھا، سینئر پولیس افسر اور پی ایچ ڈی ہیں۔ اسی طرح گزشتہ روز ایک خبر تھی کہ وزیراعظم عمرا خان نے چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کو تبدیل نہ کرنے کی تسلی دے دی ہے، جس سے لگ رہا تھا کہ ان افسران کو تبدیل کرنے سے متعلق تحفظات تھے لیکن وزیراعظم نے یقین دہانی کروائی کہ پنجاب کے دونوں کمانڈرز کو کہیں نہیں بھیجا جائے گا، مجھے لاہور شہرجرائم سے بالکل صاف چاہیے۔ وزیراعظم نے چیف سیکرٹری پنجاب اور آئی جی پنجاب سے لاہور میں انتظامی امور اور جرائم کی شرح سے متعلق رپورٹ حاصل کی، آئی جی پنجاب پولیس نے پنجاب بالخصوص لاہور میں جرائم میں کمی کا دعوی بھی کیا، بریفنگ میں بتایا کہ لاہور میں جرائم کی شرح میں واضح کمی آئی ہے جبکہ پچھلے کئی گینگسٹر پکڑے گئے۔ وزیراعظم نے چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار بھی کیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button