پاکستانفیچرڈ پوسٹ

دلیپ کمار اور راجکپور کے پشاور میں واقع گھروں کو خریدنے کے لئے سرکاری پیسہ کیوں خرچ کیا؟ صحافی انصار عباسی نے وزیراعظم سے جواب مانگ لیا

اداکار راجکپور کے آبائی گھر کے مالک نے ڈیڑھ کروڑ میں مکان فروخت کرنے سے انکار کردیا اور حکومت سے 2 ارب روپے کا مطالبہ کیا ہے

سینئر صحافی انصار عباسی نے وزیراعظم سے جواب مانگتے ہوے کہا کہ دلیپ کمار اور راجکپور کے پشاور میں واقع گھروں کو خریدنے کیلئے سرکاری پیسہ کیوں خرچ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی کا کہنا تھا پی ٹی آئی کی خیبر پختونخوا حکومت نے بھارتی فلموں کے دو اداکاروں دلیپ کمار اور راج کپور کے پشاور میں واقع آبائی گھروں کو خرید کر میوزیم میں تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے لئے کڑوروں رویے مختص کئے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق اداکار راج کپور کے آبائی گھر کے مالک نے ڈیڑھ کروڑ روپے میں مکان فروخت کرنے سے انکار کردیا اور حکومت سے 2 ارب روپے کا مطالبہ کیا ہے۔ گزشتہ منگل کے روز ڈپٹی کمشنر پشاور کو دونوں مکانات کی خریداری کے لئے 24ملین روپے کی رقم جاری کر دی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق راج کپور کی پیدائش 1924 میں پشاور کے علاقہ ڈھکی نعلبندی کے ایک ہندو خاندان میں ہوئی تھی۔ دونوں تاریخی گھروں کو خریدنے کے بعد دوسرے مرحلے میں گھروں کی مرمت اور ان کی اصلی حالت میں بحالی کا کام ہوگا اور آخری مرحلے میں بحالی پلان کے تحت گھروں کو میوزیم میں تبدیل کیا جائیگا۔ عمران خان جس بالی ووڈ کی مثالیں دے دے کر یہ کہتے ہیں کہ اس نے بھارتی کلچر کو تباہ کیا، اسی سے تعلق رکھنے والے دو فلمی اداکاروں، جن کی پیدائش پاکستانی میں ہوئی، کو ہیروز کا درجہ دے کر ان کے گھروں کی خریداری اور انہیں میوزیم بنانے کے لئے قومی خزانے سے کروڑوں روپیہ خرچ کیے جا رہے ہیں۔ پہلی بات تو یہ کہ کیا اس اسلام اور ان اسلامی تعلیمات جن کا حوالہ بار بار وزیراعظم عمران خان دیتے ہیں، کے مطابق کسی فلمی اداکار کو ایک اسلامی معاشرہ میں ہیرو بنا کر پیش کیا جا سکتا ہے؟

متعلقہ خبریں

Back to top button