پاکستان

آج کل وزیراعظم ہاؤس پر کس کس قسم اور کردار کے لوگوں کا قبضہ ہے؟ ناقابل یقین انکشاف کر دیا گیا

اس وقت وزیراعظم ہاؤس میں بد معاشیہ موجود ہے‘یہ بات میں پہلے دن سے کہہ رہا ہوں اور آج پھر دوہرا رہا ہوں

سینئر صحافی و تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے ناقابل یقین انکشاف کرتے ہوئے بتا دیا ہے کہ آج کل وزیراعظم ہاؤس پر کس کس قسم اور کردار کے لوگوں کا قبضہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق صحافی و تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ کرپشن کے اوپر کوئی کام ہو رہا ہو، وزیراعظم کی کابینہ میں کوئی دودھ کے دھلے ہوئے لوگ نہیں ہیں۔ اس کابینہ میں لوٹ مار کی انتہا ہے، چوری اور کرپشن کی بھی انتہا ہے۔ عمران خان کے بارے میں ان کے مخالفین الزام عائد کرتے ہیں کہ وہ اہل نہیں ہیں، اور انہیں تجربہ نہیں ہے لیکن آج تک ان پر کرپشن کا کوئی الزام نہیں لگا، ایسا نہیں ہوا کہ کوئی وزیراعظم سے مل کر باہر نکلے تو دیکھے کہ باہر کوئی دو فرنٹ مین بیٹھے ہوئے ہیں۔

ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ اس وقت وزیراعظم ہاؤس میں بد معاشیہ موجود ہے۔ یہ بات میں پہلے دن سے کہہ رہا ہوں اور آج پھر دوہرا رہا ہوں۔ وزیراعظم ہاؤس میں بدمعاشیہ نے اپنے پنجے گاڑ لیے ہیں۔ اگر عمران خان کسی کو انکار کرتے ہیں تو باہر ایک بندہ کھڑا ہوتا ہے جو کہتا ہے کہ یار مجھے پیسے پکڑا کام ہو جائے گا۔ اور یہ مجھے ذاتی تجربہ ہے۔ مجھے بہت شرمندگی ہوئی ہے، اگر کوئی اپنا کام کہہ دے تو پہلے کہا جاتا ہے کہ نہیں یہ نہیں ہو سکتا، خان صاحب نہیں مانیں گے اور اس کے بعد اگر اسی بندے کو کچھ ہیسے پکڑا تو کام ہوجاتا ہے۔

ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ کرپشن اور کرپشن کا سمندر ہے۔ یہ بہت ضروری ہے کہ آس پاس ایسے لوگ موجود ہوں جیسے ندیم افضل چن۔ عمران خان کی پالیسی کرپشن کے خلاف ہے کہ اس حکومت نے کرپشن کے خلاف کارروائی کرنی ہے اور عوام کو ڈیلیور کرنا ہے۔ ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ نور عالم باقاعدہ ایک سیاسی شخصیت ہیں۔ عوام میں ان کی جڑیں موجود ہیں۔ یہ وہ لوگ ہیں جو باہر جا کر لوگوں سے ملتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ مہنگائی ہے لوگ ہم سے سوال کرتے ہیں۔ اب اس بات پر اختلاف پر عمران خان نے کہا کہ جو اختلاف کرے گا وہ نکل جائے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button