پاکستان

جسٹس (ر) عظمت سعید میرے اچھے دوست ہیں لیکن میں مریم نواز کے بیان سے متفق ہوں‘ سابق گورنر سندھ کا حیران کن بیان

مریم نواز نے جو آج جسٹس (ر)عظمت سعید پر بیان متفق ہوں‘تحفظات بہت ہو چکے ہیں اس لیے ان کو کمیٹی سے الگ ہونا چاہیے

جسٹس (ر) عظمت سعید میرے اچھے دوست ہیں لیکن میں مریم نواز کے بیان سے متفق ہوں‘ سابق گورنر سندھ اور مسلم لیگ ن کے رہنماء محمد زبیر نے حیران کن بیان داغ دیا۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما محمد زبیر نے کہا ہے کہ جسٹس (ر)عظمت سعید میرے کلاس فیلو اور اچھے دوست بھی رہے ہیں۔پانامہ کیس کے دوران کبھی جسٹس (ر)عظمت سعید سے بات نہیں کی۔انہوں نے مزید کہا کہ بیرون ملک کسی کمیٹی سربراہ پر اعتراض ہوتا ہے تو وہ خود کمیٹی چھوڑ دیتا ہے۔جسٹس (ر)عظمت سعید پر اعتراض ہو ر ہا ہے تو خود کمیٹی سے الگ ہو جائیں۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز نے جو آج جسٹس (ر)عظمت سعید پر بیان متفق ہوں۔تحفظات بہت ہو چکے ہیں اس لیے جسٹس (ر)عظمت سعید کو کمیٹی سے الگ ہونا چاہئیے۔مشرف دور میں جسٹس (ر)عظمت نیب میں شامل تھے اس لیے تحفظات ہیں،ان کا کہنا تھا کہ براڈ شیٹ معاملے پر تو موجودہ حکومت نے ڈھائی سال سے کچھ نہیں کہا۔ حکومت کو براڈ شیٹ سے ایسی کیا محبت تھی کہ رقم بھجوا دی۔

ہمارے اثاثے ابھی بھی باہر موجود ہے تو تلاش کر لیں۔علاوہ ازیں آرمی چیف سے ہونے والی ملاقات سے متعلق محمد زبیر نے کہا کہ اسلام آباد کلب میں 200 لوگوں کی موجودگی میں ان کی آرمی چیف سے ملاقات ہوئی۔ ملاقات کے دوران جنرل قمر جاوید باجوہ کو ایک لطیفہ سنایا تھا جس کے بارے زیادہ بات نہیں کرنا چاہتا۔ محمد زبیر کہتے ہیں کہ پہلے بھی آرمی چیف سے ملاقات کے حوالے سے بہت سے باتیں پھیل گئی تھیں اس لیے حالیہ ملاقات سے متعلق زیادہ بات نہیں کروں گا۔ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اتوار کے روز اسلام آباد کلب میں برنچ کیا تھا۔ معروف صحافی صالح ظفر اس حوالے سے اپنی رپورٹ میں لکھتے ہیں کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اہلخانہ کے ہمراہ اسلام کلب میں سنڈے برنچ کیا۔ انہوں نے عام شہریوں کی طرح خود کھانا پلیٹ میں ڈالا اور دیگر مہمانوں کی طرح کھانا لینے کے لیے اپنی باری کا انتظار کیا۔ کچھ ذرائع نے دعوی کیا کہ زبیر عمر کو آرمی چیف سے ملاقات کی اجازت نہیں ملی۔ یہ تمام دعوے غلط ہیں۔ آرمی چیف نے کسی شخص سے بھی ملاقات کرنے سے انکار نہیں کیا، جنرل قمر جاوید باجوہ ناصرف عام لوگوں سے ملے، بلکہ کلب میں زبیر عمر اور ان کے اہل خانہ سے بھی ان کی سلام دعا ہوئی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button