پاکستان

"سہیلی کو قتل کرکے لڑکی کی خودکشی”۔۔۔سدرہ کون ہے؟ تفتیش میں اہم انکشاف

فیصل آباد میں سہیلی کو قتل کرکے لڑکی کی خودکشی کے واقعے میں نیا رخ سامنے آگیا۔

فیصل آباد کے علاقے ساہیانوالہ کے گاؤں لاہوریاں میں 4 سال کی دوستی ختم ہونے پر لڑکی نے سہیلی کی جان لے لی۔پولیس کی ابتدائی تفتیش میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ میل جول بڑھانے اورگھر آنے سے منع کرنے پرملزمہ ناراض تھی اور وہ مسلح ہو کر عقبی مکان سے چھت پر چڑھ گئی اور گھرمیں موجود سہیلی مقدس پر پستول سے فائرکھول دیا۔زخمی لڑکی جان بچانے کیلئے سیڑھیوں سے نیچے بھاگی تو ملزمہ نے پیچھے جا کر صحن میں گری سہیلی پر مزید گولیاں چلا دیں جو اسپتال منتقلی کے دوران دم توڑ گئی۔

مقتولہ کو بچانے آئی اس کی چچی شازیہ بھی گولی کا نشانہ بن کر زخمی ہو گئی۔پولیس کے مطابق ملزمہ نبیلہ نے سہیلی پر فائرنگ کے بعد خود بھی زہریلی گولیاں نگل لیں اور اسپتال منتقلی کے دوران دم توڑ گئی۔ مقدس کے اہلخانہ کے مطابق بیٹی سے ملزمہ کامیل جول پسند نہیں تھا اور کئی بار اسے گھر آنے سے منع کیا تھا۔

دونوں سہیلیوں کا پوسٹمارٹم ہونے پر لاشیں ورثاء کے سپرد کردی گئی ہیں، پولیس کے مطابق مقدس کو پانچ گولیاں لگی ہیں۔مقتولہ مقدس کے بھائی اجمل نے مقدمہ درج کرواتے ہوئے نبیلہ کے ساتھ اس کے بھائی احسان پر بھی فائرنگ کرنے میں ملوث ہونے کا الزام لگایا ہے جبکہ ایک لڑکی سدرہ اورنوجوان شاہ زیب کو بھی نامزد کیا ہے۔ مقدمہ میں نامزد سدرہ کون ہے؟ اورشاہ زیب کا کیا کردار ہے جبکہ برآمد ہونے والے پستول کس سے حاصل کیے گئے اس پر تفتیش جاری ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button