پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پیپلز پارٹی کو اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے نکال باہر کیا جائے جب تک وہ یہ کام نہیں کرتے؟ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے شرائط سامنے رکھ دیں

سینیٹ انتخابات اوپن کرانے کے معاملہ پر پیپلز پارٹی نے آئینی ترمیم کی مخالفت کا فیصلہ واپس نہ لیا تو یہ پی ڈی ایم سے باہر ہو جائے گی

پیپلز پارٹی کو اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے نکال باہر کیا جائے جب تک وہ یہ کام نہیں کرتے؟ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے شرائط سامنے رکھ دی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ تین سال میں نیب کو نواز شریف کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ملا۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے خلاف کیسز بنائے جا رہے ہیں۔آج پٹرول کی قیمت عالمی منڈی کے حساب سے 70 روپے سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے لیکن یہاں 111 روپے فروخت کیا جا رہا ہے۔ تیل کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، مسلم لیگ ن نے حکومت چھوڑی تو تیل پر فی لٹر 15 روپے ٹیکس تھا،آج 40 روپے فی لٹر اضافی ٹیکس لیا جا رہا ہے، اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوا، بجلی کا 30 روپے یونٹ لیا جا رہا ہے ایک عام آدمی کیسے گزارا کرے حکومت کیا کر رہی ہے انہو ں نے کہاکہ2 سال میں کونسی قیامت آئی کہ بجلی کے بل دوگنا ہوگئے جس ملک میں انصاف نہ رہے وہاں نظام چل نہیں سکتا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ احتساب عدالت میں پیشی کا تیسرا سال چل رہا ہے، نواز شریف کیخلاف حکومت کو کچھ نہیں ملا، چیئرمین نیب اپوزیشن کیخلاف ہر قسم کا کیس بنانے پر بضد ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ فیصلے کے بعد پیپلز پارٹی مستعفی نہ ہوئی تو پی ڈی ایم سے باہر ہوجائے گی۔واضح رہے کہ سینیٹ انتخابات اوپن کرانے کے معاملے پر پیپلز پارٹی نے آئینی ترمیم کی مخالفت کا فیصلہ کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button