پاکستانفیچرڈ پوسٹ

اگر ہم حکومت سے اپنا اتحاد ختم بھی کر لیں تو اس مقصد میں کامیابی حاصل کرنا؟ پاکستان متحدہ قومی موومنٹ نے تحریک انصاف کی جماعت کو بڑا جھٹکا دے دیا

اس طرح تو تبدیلی نہیں آسکتی، ایم کیو ایم نے تمام کوششیں کرلیں، ہر حکومت کا ساتھ دیا مگر شہر کے مسائل کے حل کے لیے کوئی سنجیدہ نہیں

اگر ہم حکومت سے اپنا اتحاد ختم بھی کر لیں تو اس مقصد میں کامیابی حاصل کرنا؟ پاکستان متحدہ قومی موومنٹ نے تحریک انصاف کی جماعت کو بڑا جھٹکا دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقہ گلستان جوہر میں پی ایس 88 کے ضمنی انتخابات کے لیے الیکشن آفس کے افتتاح کے بعد ایم کیو ایم کے سینئیر ڈپٹی کنوینر عامر خان نے کہا کہ 2013 میں پورے ملک میں یہ سوچ پیدا کی گئی تھی کہ پی ٹی آئی تبدیلی لے کر آئے گی مگر مجھے افسوس سے کہنا پڑرہا ہے کہ کرپشن کے خلاف جو نعرہ تھا جو ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کے رپورٹ کے برعکس ہے جس میں بدعنوانی چار گنا بڑھنے کا انکشاف کیا گیا ہے۔

عامر خان نے کہا کہ اس طرح تو تبدیلی نہیں آسکتی، ایم کیو ایم نے تمام کوششیں کرلیں، ہر حکومت کا ساتھ دیا مگر شہر کے مسائل کے حل کے لیے کوئی سنجیدہ نہیں ہے۔ گرین لائن ہم نے شاہد خاقان عباسی سے منظور کرائی تھی، 25 ارب روپے لگائے بھی گئے تھے، نئے فائر ٹینڈر بھی اسی دور کے فنڈز سے خریدے گئے ہیں اس کا کریڈٹ کوئی نہیں لے سکتا۔ ایم کیو ایم رہنما نے کہا کہ ہم تو اتحاد برقرار رکھنا چاہتے ہیں مگر مسائل حل نہ ہوئے تو فیصلہ عوام کے ہاتھوں میں ہوگا۔

عامر خان نے کہا کہ قومی اسمبلی کے 7 اراکین لے کر ہم علیحدہ بھی ہوجائیں تب بھی حکومت نہیں گراسکتے اس کی وجہ نظام کی خرابی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اعلانات تو ہم نے 162 ارب روپے کے بھی سنے ہیں اس کے بعد 1100 ارب روپے کے دعوے بھی کیے گئے اس کا بھی کوئی پتہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف نظام کو نقصان نہ پہنچے اسی لیے پی ٹی آئی کا ساتھ دے رہے ہیں۔ خیال رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت بننے کے بعد سے ہی موجودہ حکومت کو اتحادیوں کی جانب سے کئی چیلنجز کا سامنا رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button