پاکستان

"آمدنی کم اخراجات زیادہ”۔۔۔ اورنج لائن پنجاب کے خزانے پر بوجھ بن گئی،حکومت پریشان

 اورنج لائن میٹر و ٹرین صوبے کے خزانے پر بوجھ بن گئی۔

اورنج لائن میٹروٹرین پر70لاکھ پانچ ہزار 894مسافروں سے کرایہ کی مد میں28کروڑ23لاکھ 576روپے آمدن ہوئی جبکہ35کروڑ35لاکھ 39ہزار837روپے کی بجلی استعمال کرلی گئی، جبکہ دیگر اخراجات اس کے علاوہ ہیں۔محکمہ ٹرانسپورٹ پنجاب کی ناقص منصوبہ بندی کے باعث اورنج لائن ٹرین کے خسارے میں اضافہ ہوگیا۔اورنج لائن ٹرین کے فیڈرروٹس پر بسیں چلیں اور نہ ہی ٹریک کے نیچے پبلک ٹرانسپورٹ کوروکا جاسکا ۔اورنج ٹرین پر سفر کرنے والوں کی تعداد میں کمی سے ٹرین کا خسارہ بڑھنے لگا اورنج ٹرین میں مسافروں کی تعداد میں کمی کے بعد , ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے حکام نے ٹرین کے کرائے میں 10 روپے کم کرنے کی تجویز دے دی۔

اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے پر روزانہ کی بنیاد پر مسافروں کی تعداد میں کمی ہو رہی ہے جس میں ایک وجہ کورونا وائرس اور ٹرین ٹریک کے نیچے نجی ٹرانسپورٹ کا چلنا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ گزشتہ روز ماس ٹرانزٹ اتھارٹی نے وزیر اعلی کے مشیر ڈاکٹر سلمان شاہ کو دی جانے والی بریفنگ میں کہا کہ اورنج ٹرین کے کرایے میں 10 روپے کمی ہونی چاہیے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button