پاکستان

مارکیٹ کمیٹیوں کے باغی دھڑے نے وزیر اعظم کا حکم ماننے سے انکار کر دیا

پنجاب میں تحلیل کی گئی مارکیٹ کمیٹیوں کے معذول چیئرمینوں کے ایک باغی دھڑے نے اپنے پارٹی چیئرمین اور وزیر اعظم کے احکامات تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

2 روز قبل وزیر اعظم کے حکم پر پنجاب کی 116 مارکیٹ کمیٹیوں کو تحلیل کردیا گیا تھا جس کے بعد تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے چیئرمین اور وائس چیئرمین عہدے کے درجنوں افراد نے وزیراعظم کے حکم کو تسلیم کر لیا تاہم راولپنڈی، صادق آباد اور شیخوپورہ کی چند مارکیٹ کمیٹیوں کے سابق چیئرمینوں نے پنجاب بھر کی مارکیٹ کمیٹیوں کے چیئرمینز سے رابطہ کر کے انہیں لاہور میں شملہ پہاڑی کے نزدیک واقع ایک ہوٹل میں ایک اجلاس میں شرکت کی دعوت دی۔

لاہور کے نجی ہوٹل میں معزول چیئرمینوں کا اجلاس منعقد ہوا جس میں 35 تا40 افراد نے شرکت کی۔ اجلاس میں وزیر اعظم کے فیصلے پر غور کیا گیا، بعض چیئرمینوں نے برہمی کا اظہار کیا کہ ہمارے پارٹی چیئرمین کو یہ فیصلہ نہیں کرنا چاہیے تھا کیونکہ مہنگائی کے ذمہ دار ہم نہیں، حکومت کے اس فیصلے سے وہ آئندہ الیکشن کیلئے نا اہل بھی ہوسکتے ہیں تاہم انہیں بتایا گیا کہ حکومت نے جو فیصلہ کیا ہے اس میں کرپشن یا مس کنڈکٹ کا الزام نہیں لگایا گیا بلکہ بد انتظامی کا چارج ہے جس سے الیکشن کے لئے نا اہلی نہیں ہو گی۔

اجلاس میں شریک افراد نے وزیر اعظم کے فیصلے پر سخت الفاظ میں نکتہ چینی کی اور یہ اتفاق رائے کیا گیا کہ اس فیصلے کے خلاف عدالت عالیہ سے رجوع کیا جائے گا ۔

متعلقہ خبریں

Back to top button