پاکستان

سینیٹ انتخابات‘ کون سی جماعت کتنی نشستیں حاصل کرے گی؟ پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ ن میں کون آگے جائے گا؟ تمام اعداد و شمار بھی سامنے آگئے

سینیٹ الیکشن کا میدان سجنے کوہے مگر اسکی اہمیت امیدواروں اور نشستوں کے علاوہ اس کے طریقہ کار نے مرکزی اہمیت اختیار کرلی ہے

سینیٹ انتخابات‘ کون سی جماعت کتنی نشستیں حاصل کرے گی؟ پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ ن میں کون آگے جائے گا؟ تمام اعداد و شمار بھی سامنے آگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ الیکشن کا میدان سجنے کوہے مگر اسکی اہمیت امیدواروں اور نشستوں کے علاوہ اس کے طریقہ کار نے مرکزی اہمیت اختیار کرلی ہے۔حکومت چاہتی ہے کہ رائج طریقہ کار یعنی خفیہ رائے شماری کو ختم کرکے آرڈیننس کے ذریعے شو آف ہینڈ کو نافذ العمل قرار دیاجائے جبکہ عدالت نے اس پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔حکومت کا موقف ہے کہ طریقہ کار بدلنے کی یہ شق آئین میں کہیں نہیں لکھی لہذا سینیٹ الیکشن کے طریقہ کار میں آرڈیننس کے ذریعے ترمیم کی جا سکتی ہے۔

سپریم کورٹ کے ججز کا کہنا ہے کہ یہ اتنا آسان عمل نہیں ہے آرڈیننس کے ذریعے سینیٹ الیکشن میں ترمیم ہو جائے۔ اس طریقہ کار سے ترمیم کرنے کا مقصدہے کہ آئندہ آنے والی ہر حکومت آرڈیننس کے ذریعے ہر بار سینیٹ الیکشن کے طریقہ کو تبدیل کرتی رہے گی۔ہمیں آئین کو مد نظر رکھتے ہوئے اس عمل کو باریک بینی سے دیکھنا ہو گا۔ اس بار سینیٹ کی 48 نشستوں پر انتخابات پر انتخابی دنگل سجے گا۔ فاٹا کی چار نشستوں پر انتخابات نہیں ہوں گے جس کے باعث اس بار سینیٹ کی نشستیں 104 سے کم ہو کر 100 رہ جائیں گی۔ ممکنہ طور پر فاٹا کی باقی چار نشستوں پر سینیٹرز 2024 میں ریٹائر ہوجائیں گے جس کے بعد فاٹا کی آٹھ نشستوں کافیصلہ ہوگا کہ آیا یہ سیٹیں خیبرپختونخوا کو دی جائیں گی یا صوبوں میں برابر تقسیم ہوں گی۔ فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے بعد اس کی نشستوں کی تقسیم کا آئینی سوال حل طلب ہے۔اس سال سینیٹ سے 52سینیٹرز ریٹائر ہوجائیں گے جن میں مسلم لیگ ن کے 15، پیپلزپارٹی کے 7، تحریک انصاف7 اور 5 آزاد سینیٹرز شامل ہیں۔جنرل نشستوں پر 33، ٹیکنو کریٹ کی نشست پر 8،خواتین کی 9 اورغیر مسلم کی دو نشستیں خالی ہو رہی ہیں۔

سینیٹ انتخابات 2021 کے ممکنہ نتائج کے مطابق تحریک انصاف 28 نشستوں کے ساتھ سینیٹ کی اکثریتی جماعت بن جائے گی۔پیپلز پارٹی 19 سینیٹرز کے ساتھ دوسری، مسلم لیگ ن 18 نشستوں کے ساتھ تیسری اور بلوچستان عوامی پارٹی 12 نشستوں کے ساتھ چوتھی بڑی جماعت بن کر سامنے آئے گی۔ اعدادوشمار کا یہ کھیل ہر اسمبلی میں اپنی اپنی طرز پر جاری جبکہ حتمی امیدواروں کے نام سامنے آنے پر یہ الٹ پلٹ اور تیز ہوجائے گی۔ سینیٹ الیکشن کی آمد کے ساتھ ہی ہر سیاسی جماعت سیاسی شطرنج کا احاطہ کرتے ہوئے اپنے اپنے مخالفین کی چال کو ناکام بنانے کیلئے حکمت عملی بنارہی ہے۔اس تحقیقاتی رپورٹ میں قارئین کو ہر صوبے کی اسمبلی کے بارے میں ہونے والی ممکنہ سیاسی چالوں کے بارے میں آگاہی فراہم کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button