پاکستان

مان لیا اب فوج کا سیاست میں کوئی کردار نہیں مگر 2018ء کے انتخابات میں کیا ہوا تھا؟ بتایا جائے؟ شاہد خاقان عباسی کا بڑا مطالبہ سامنے آگیا

حکومت وکلا کے ساتھ اشتعال انگیزی کرے گی تو آگے سے بھی اشتعال انگیزی ہو گی، کسی کا دفتر یا کوئی جگہ کرانے سے پہلے نوٹس دیا جاتا ہے

پاکستان مسلم لیگ (ن)کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے بڑا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مان لیا اب فوج کا سیاست میں کوئی کردار نہیں مگر 2018ء کے انتخابات میں کیا ہوا تھا سب کو بتایا جائے؟

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ وفاقی دارالحکومت میں امن و امان کی صورتحال سب کے سامنے ہے اور کل ہائیکورٹ کا واقعہ پیش آیا، آج ملک کی عدالتوں کے دروازے بھی بند ہوگئے اور وہ بھی غیر محفوظ ہیں، ان عدالتوں میں جو کیس ہیں اور جو فیصلے ہیں انہیں پوری دنیا جانتی ہے، جب ملک میں آئین و قانون اور عدالتوں کا یہ حال ہوگا تو بڑی نا انصافی ہوگی۔

شاہد خاقان عباسی نے گزشتہ روز وکلا گردی کا جواز تراشتے ہوئے کہا کہ حکومت وکلا کے ساتھ اشتعال انگیزی کرے گی تو آگے سے بھی اشتعال انگیزی ہو گی، کسی کا دفتر یا کوئی جگہ کرانے سے پہلے نوٹس دیا جاتا ہے، پہلے بتایا جاتا ہے آگاہ کیا جاتا ہے، جب بغیر بتائے بغیر نوٹس کے گرائیں گے چیزیں تو کل والا وقعہ دیکھ لیں۔ شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ ملک کے حکمرانوں کو آئین و قانون کی کوئی پرواہ نہیں ہے، ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا ہے کہ فوج کا سیاست سے تعلق نہیں، جو ملک میں ہو رہا ہے، 2018 میں جو ہوا اس کی ذمہ داری کس کی ہے؟ جب حکومت بے شرم ہو جائے، جب وہ عوام کی نمائندہ نہ ہو تو یہی ہوتا ہے جو ملک میں ہو رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button