پاکستانفیچرڈ پوسٹ

خاتون محتسب کشمالہ طارق نے اپنے بیٹے کو پھانسی کے پھندے سے بچانے کے لئے کون کون سے حربے استعمال کیے؟ چونکا دینے والی رپورٹ منظر عام پر

اب جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ کی جانب سے وفاقی محتسب کے بیٹے اذلان کو مدعیوں کی جانب سے فی سبیل اللہ معاف کر دیا گیاہے

خاتون محتسب کشمالہ طارق نے اپنے بیٹے کو پھانسی کے پھندے سے بچانے کے لئے کون کون سے حربے استعمال کیے؟ چونکا دینے والی رپورٹ منظر عام پرآگئی۔

تفصیلات کے مطاق سری نگر ہائی وے پر ہونے والے کشمالہ طارق کے قافلے نے سگنل توڑتے ہوئے تیزی سے گزرنے کی کوشش کی جس دورا ن قافلے میں شامل گاڑی کی موٹر سائیکل اور کار سے ٹکر ہوئی جس میں چار افراد جان کی بازی ہار گئے تھے لیکن اب ان کے اہل خانہ کی جانب سے وفاقی محتسب کے بیٹے اذلان کو مدعیوں کی جانب سے فی سبیل اللہ معاف کر دیا گیاہے۔

تفصیلات کے مطابق کشمالہ طارق کے بیٹے ملزم اذلان کے وکیل سعید خورشید نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ یہ ایک حادثہ تھا جس میں فریقین کا راضی نامہ ہوچکا ہے۔وکیل نے کہا اذلان بے گناہ ہے وہ گاڑی نہیں چلا رہا تھا، ڈرائیور نے بھی پولیس کو بیان دیا حادثہ اس سے ہوا ہے۔ فریقین نے سی سی ٹی وی کیمروں کی ریکارڈنگ دیکھنے کے بعد فی سبیل اللہ معاف کیا ہے۔ پولیس کہتی ہے سی سی ٹی وی کیمروں سے کلئیر نہیں ہو رہا، جان بوجھ کر اذلان کو پھنسایا جا رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button