پاکستان

صدارتی ریفرنس:جسٹس فائزکی درخواست پرفیصلہ سنادیا گیا

سپریم کورٹ نےجسٹس قاضی فائزعیسٰی نظرثانی کیس میں بینچ کی تشکیل کا فیصلہ سنا دیا

سپریم کورٹ نےجسٹس قاضی فائزعیسٰی نظرثانی کیس میں بینچ کی تشکیل کا فیصلہ سنا دیا۔ سپریم کورٹ کی جانب سےبینچ کےسربراہ جسٹس عمرعطا بندیال نےایک صفحےپرمشتمل مختصرفیصلہ سنایا۔ عدالت نےاپنےفیصلے میں کہا کہ بینچ تشکیل دینےکا اختیارچیف جسٹس آف پاکستان کےپاس ہے،چیف جسٹس چاہیں تونظرثانی درخواستوں پر لارجربینچ بھی بنا سکتےہیں۔ سپریم کورٹ نےجسٹس قاضی فائزعیسیٰ کیس میں محفوظ شدہ فیصلہ 5 ایک کی نسبت سےسنایا۔ چھ رکنی لارجربینچ میں شامل جسٹس منظوراحمد ملک نےفیصلےسےاختلاف کیا،جسٹس منظوراحمد ملک فیصلےکےحوالےسےاختلافی نوٹ لکھیں گے۔

عدالت نےجسٹس فائزعیسیٰ کی نظرثانی درخواستیں بینچ تشکیل کےلیےچیف جسٹس کوبھجوا دیں۔ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کےخلاف صدارتی ریفرنس میں نظرثانی درخواستیں دائرکی گئی تھیں،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ اوراہلیہ سرینا عیسیٰ سمیت مختلف بارکونسلزنےنظرثانی درخواستیں دائرکی تھیں۔ نظرثانی درخواستوں میں 6 رکنی لارجربینچ کےبجائےفل کورٹ بنانےکی استدعا کی گئی تھی۔ جسٹس عمرعطا بندیال کی سربراہی میں 6 رکنی لارجربینچ نے 10 دسمبر 2020 کوفیصلہ محفوظ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button