پاکستان

سکروٹنی کمیٹی کا فیصلہ، اکبر ایس بابر نے دبنگ قدم اٹھا لیا، حکومت پریشان

الیکشن کمیشن میں جمع کروائی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ اسکروٹنی کمیٹی کا پی ٹی آئی ریکارڈ خفیہ رکھنے کا فیصلہ غیر قانونی ہے

پاکستان تحریک انصاف کے بانی رہنما اور فارن فنڈنگ کیس کے پٹیشنر اکبر ایس بابر نے (پی ٹی آئی)کے ریکارڈ کو خفیہ رکھنے کے اسکروٹنی کمیٹی کے فیصلے کے خلاف درخواست الیکشن کمیشن میں جمع کرا دی۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ اسکروٹنی کمیٹی کا پی ٹی آئی ریکارڈ خفیہ رکھنے کا فیصلہ غیر قانونی ہے جبکہ اسکروٹنی کمیٹی کا فیصلہ الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ اسکروٹنی کمیٹی نے اپنے مینڈیٹ سے تجاوز کیا کیونکہ اسکروٹنی کمیٹی کا کام حقائق تلاش کرنا ہے، حقائق چھپانا نہیں۔

انہوں استدعا کی کہ الیکشن کمیشن اسکروٹنی کمیٹی کو ہدایت کرے کہ تمام دستاویزات درخواست گزار کو فراہم کی جائیں۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ خفیہ اسکروٹنی کے نتیجے میں آنے والی رپورٹ کو الیکشن کمیشن نے اگست میں خود مسترد کیا تھا۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ پی ٹی آئی کا رکن ہونے کی حییثت سے حق ہے کہ مجھے ریکارڈ فراہم کیا جائے، ریکارڈ کے بغیر میں سکروٹنی کمیٹی کی درست انداز سے معاونت نہیں کر سکتا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button