پاکستان

کورونا کے دوران ریلیف دینے پر کتنے فیصد تاجر حکومت سے مطمئن؟ حیران رپورٹ سامنے آگئی

کاروباری افراد کو ریلیف پہنچانے پر حکومت کی کارکردگی سے سروے میں 50 فیصد تاجر مطمئن نظر آئے جب کہ 37 فیصد نے غیر مطمئن ہونیکا بتایا

ملک کے 50 فیصد تاجر کورونا سے متاثرہ کاروباری طبقے کو ریلیف پہنچانے پر وفاقی حکومت سے مطمئن نظر آتے ہیں جب کہ 37 فیصد نے عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق عوامی آرا جاننے کے حوالے سے معروف ادارے گیلپ پاکستان کے نئے سروے میں ہوا ہے، سروے میں 400 سے زائدکاروباری شعبوں کی آرا کو شامل کیا گیا ہے۔ کاروباری افراد کو ریلیف پہنچانے پر وفاقی حکومت کی کارکردگی سے سروے میں 50 فیصد تاجر مطمئن نظر آئے جب کہ 37فیصد نے غیر مطمئن ہونے کا بتایا اور 13 فیصد نے نہ مطمئن نہ غیر مطمئن ہونیکا کہا۔

وفاقی حکومت کی کارکردگی سے سب سے زیادہ مطمئن 61 فیصد مینوفیکچرنگ کا شعبہ نظر آیا، تجارتی شعبے سے 56 فیصد جب کہ خدمات سے 47 فیصد نے مطمئن ہونیکا بتایا۔ صوبوں میں سب سے زیادہ سندھ سے64 فیصد تاجروں نے وفاقی حکومت کی جانب سے کاروباری طبقوں کو ریلیف پہنچانے پر کارکردگی سے مطمئن ہونیکا کہا البتہ 26 فیصدنے غیر مطمئن نظر آئے۔ خیبرپختونخوا اور بلوچستان سے 51 فیصد نے کارکردگی سے مطمئن تو 26 فیصد نے غیر مطمئن ہونے کا کہا،جب کہ پنجاب سے 46 فیصد نے وفاقی حکومت کی کارکردگی سے مطمئن تو 41 فیصد نے غیر مطمئن ہونیکا کہا۔

اس سوال پر 32 فیصد نے مہنگائی کو کنٹرول کرنے کاکہا اور 8 فیصد نے حکومتی پالیسی میں عدم تسلسل، 7 فیصد نے ٹیکس مسائل، 5 فیصد نے حکومت کی جانب سے مزید ریلیف دینیاور کاروباری طبقے کو بلا سود قرضے کی فراہمی کا ذکر کیا۔ 5 فیصد نے کرپشن،4 فیصد نے کورونا کی وبا اور لاک ڈاؤن، 2 فیصد نے روپے کی قدر میں کمی، 2 فیصد نے برآمدات اور درآمدات کی حکومتی پالیسی جب کہ7 فیصد نے دیگر مسائل کا ذکرکیا۔ سروے میں 12 فیصد ایسے تھے جن کا کہنا تھاکے ان کی نظر میں فی الحال کوئی مسئلہ نہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button