پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پاکستان کسان اتحاد کا مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں 31 مارچ کو اسلام آباد کا رخ کرنے کا اعلان‘ عمران حکومت نے ایک بار پھر سر جوڑ لیے

حکومت ہمارے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے مہنگائی کو کنٹرول میں کرے، کھاد بیج سمیت تمام زرعی مداخل کے ریٹس کو کم کیا جائے

پاکستان کسان اتحاد کا مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں 31 مارچ کو اسلام آباد کا رخ کرنے کا اعلان کے بعد عمران حکومت نے ایک بار پھر سر جوڑ لیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اوکاڑہ کے قصبے حجرہ شاہ مقیم میں ٹریکٹر مارچ کیا گیا، پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی سیکرٹری جنرل چوہدری حسان اکرم نے کہا کہ اگر حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لیے اور مطالبات تسلیم نہ کیے تو 31 مارچ کو پنجاب بھر سے ہزاروں کسان ٹریکٹر ٹرالیوں پر سوار ہو کر اسلام آباد کا رخ کریں گے جہاں دمام دم مست قلندر ہوگا اور کسان مطالبات کی منظوری تک دھرنا دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ہمارے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے مہنگائی کو کنٹرول میں کرے، کھاد بیج سمیت تمام زرعی مداخل کے ریٹس کو کم کیا جائے، جب کہ بھارت سے زرعی اجناس درآمد نہ کی جائیں، اور بجلی بلوں پر ناجائز ٹیکس اور بقایا جات ختم کیے جائیں۔ قبل ازیں صوبہ پنجاب کے شہر اوکاڑہ کے قصبے حجرہ شاہ مقیم میں پاکستان کسان اتحاد زیر اہتمام حجرہ شاہ مقیم اور تحصیل بھر سے اوکاڑہ تک ٹریکٹر مارچ کیا گیا جس میں سیکڑوں ٹریکٹروں پر سوار کسانوں نے حکومت مخالف نعرے بازی کی، ٹریکٹر مارچ کے دوران قصور ملتان روڈ اور اوکاڑہ دیپالپور روڑ بلاک ہو گئے جس سے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button