پاکستانفیچرڈ پوسٹ

کراچی میں سندھ اسمبلی کے باہرکنٹریکٹ اساتذہ کا احتجاج شدت اختیار کرگیا‘ مظاہرین اور پولیس میں جھڑپ، خاتون ٹیچر کی خود سوزی کی کوشش ناکام بنا دی

کراچی میں سندھ اسمبلی کے باہرکنٹریکٹ اساتذہ کا احتجاج شدت اختیار کرگیا، پولیس نے مظاہرین کو ریڈ زون کی طرف جانے سے روک دیا

کراچی میں سندھ اسمبلی کے باہرکنٹریکٹ اساتذہ کا احتجاج شدت اختیار کرگیامظاہرین اور پولیس میں جھڑپ، خاتون ٹیچر کی خود سوزی کی کوشش ناکام بنا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں سندھ اسمبلی کے باہرکنٹریکٹ اساتذہ کا احتجاج شدت اختیار کرگیا، پولیس نے مظاہرین کو ریڈ زون کی طرف جانے سے روک دیا۔ سندھ اسمبلی کے باہر مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپ بھی ہوئی جس کے بعد ایک خاتون ٹیچر نے خود سوزی کی کوشش کی تاہم ساتھی اساتذہ نے اس کوشش کو ناکام بنادیا۔ پولیس نے خود کو آگ لگانے والی خاتون کو حراست میں لے کر تھوڑی دیر بعد چھوڑ دیا۔ صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا ہے کہ معاملہ مختلف عدالتوں میں ہے، چاہیں بھی تو احتجاج کرنے والے اساتذہ کو مستقل نہیں کرسکتے۔

دوسری جانب احتجاجی اساتذہ کا کہنا ہے کہ صوبائی وزیر تعلیم کا ان کے کیس کو دوسرے معاملات سے جوڑ نا سراسر غلط ہے، اساتذہ کا مطالبہ یہ ہے کہ سندھ حکومت نئی بھرتیوں کا عمل روکے اور جو اساتذہ 4 سال سے کنٹریکٹ پر ملازمت کررہے ہیں، پہلے انہیں مستقل کیا جائے۔ احتجاجی اساتذہ کا کہنا ہے کہ جب تک سندھ حکومت ان کے مطالبات نہیں مانتی، احتجاج جاری رہے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button