پاکستانفیچرڈ پوسٹ

ناشتے کی میز پر وزیراعظم عمران خان کی پالیسی کچھ ہوتی ہے اور دوپہر کے کھانے کے بعد کچھ اور ………… ……چین کی جانب سے پاکستان پر شدید تنقید، سب حیران

یہاں ناشتہ کے وقت ایک پالیسی کا اعلان کرتے ہیں اور دوپہر کے کھانے سے پہلے اسے تبدیل کردیتے ہیں‘ یہ صورتحال کافی تشویشناک ہے

ناشتے کی میز پر وزیراعظم عمران خان کی پالیسی کچھ ہوتی ہے اور دوپہر کے کھانے کے بعد کچھ اور ………… ……چین کی جانب سے پاکستان پر شدید تنقید، سب حیران رہ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق چین کے قونصل جنرل لی بی جیان نے کہا ہے کہ پاکستان کو ترقی کیلئے مستقل معاشی پالیسیوں کی جانب توجہ دینا ہوگی،یہاں ناشتہ کے وقت ایک پالیسی ہوتی ہے اور دوپہر کے کھانے کے بعد دوسری،وہ گزشتہ روز ایف پی سی سی آئی میں تاجروں و صنعتکاروں سے خطاب میں اظہار خیال کررہے تھے۔

چینی قونصل جنرل نے پاکستان اور چین کے مابین تجارتی تعلقات میں درپیش مختلف رکاوٹوں کی نشاندہی کی اور چینی کاروباریوں اور یہاں کام کرنے والے لوگوں کے تحفظ کے حوالے سے شکایت کی اور کہاکہ پاکستان میں حکومت کی طرف سے مستقل معاشی پالیسیاں نہیں تھیں۔انہوں نے کہاکہ یہاں ناشتہ کے وقت ایک پالیسی کا اعلان کرتے ہیں اور دوپہر کے کھانے سے پہلے اسے تبدیل کردیتے ہیں اور یہ صورتحال کافی تشویش ناک ہے۔انہوں نے کہا کہ یہاں بنیادی ڈھانچے کی کمی ہماری تجارتی اور صنعتی تعلقات کو بھی نقصان پہنچا رہی ہے۔ کراچی پاکستان کا سب سے بڑا بندرگاہ شہر ہے جو کاروباری سرگرمیوں کو فروغ دینے میں ہمارے لئے مناسب ہے، نیز غیر ہنر مند مزدوری کاروباری ماحول کو نقصان پہنچا رہی ہے، ہم مزدوری کی تربیت میں اپنا پیسہ، کوشش اور وقت صرف کرتے ہیں لیکن کچھ عرصے بعد وہ اپنی وفاداریاں بدل دیتے ہیں۔قونصل جنرل نے مزید بتایا کہ گوادر میں حکومت نے کوئی پاور پلانٹ نہیں بنایا تھا، جو اس جگہ کی تیزی سے ترقی کرنا بنیادی مسئلہ ہے۔ تاہم چین وہاں بجلی کے اپنے ذرائع تشکیل دے رہا ہے جس میں وقت لگے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button