پاکستانفیچرڈ پوسٹ

بشیرمیمن کوریٹائرمنٹ لینےپرکیوں مجبورکیا؟ کا مران خان بھی بھڑک اُٹھے

تبدیلی سرکارنےبشیرمیمن کوریٹائرمنٹ لینےپرکس وجہ سےمجبورکیا،ان کےساتھ کیا سلوک کیا گیا؟ صحافی کامران خان بھی عمران خان پربھڑک اُٹھے

تبدیلی سرکارنےبشیرمیمن کوریٹائرمنٹ لینےپرکس وجہ سےمجبورکیا،ان کےساتھ کیا سلوک کیا گیا؟ صحافی کامران خان بھی عمران خان پربھڑک اُٹھے،سینئرصحافی واینکرپرسن کامران خان نےکہا کہ سابق ڈی جی ایف آئی اے نے وزیراعظم عمران خان سمیت دیگرلوگوں پر جو الزامات لگائے ہیں اس کی وجہ یہ ہے کہ ریٹائرمنٹ سےچند دن قبل انہیں حکومت نےعہدے سے جبری طورپرفارغ کردیا تھا جبکہ ان کی پینشن اوردیگرمراعات بھی انہیں نہیں دی گئی تھیں۔

اکاؤنٹس آفس سے ان کی کٹوتی کی رقم جو انہیں ملی وہ بھی اکاؤنٹ سے واپس واگزارکروا لی گئی تھی۔ کامران خان نےکہا کہ کسی بھی سینئر عہدیدار کا سبکدوشی کے وقت جو حق ہوتا ہے حکومت نے وہ بھی بشیر میمن صاحب کو نہیں دیا تھااس ظلم کے خلاف انہوں نےعدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا تو عدالت سے وہ کیس جیت گئے مگراس کے بعد حکومت نے اپیل دائرکردی اوراس طرح ایک سینئر افسرکے ساتھ زیادتی کی گئی۔

کامران خان کا کہنا تھا کہ آج کی ڈیٹ تک بھی سابق ڈی جی ایف آئی اے کے اکاؤنٹ میں ان کی پینشن نہیں آ سکی اور انہیں دیگر بھی کوئی مراعات یا وہ رقم نہیں ملی جو دوران سروس ان کی تنخواہ سے کٹا کرتی تھی۔سینئر صحافی کامران خان نے کہا کہ بشیر میمن کی تعیناتی اس وقت ہوئی تھی جب عمران خان نے وزیراعظم کے عہدے کا حلف لیا تھا۔اس وقت بشیر میمن اومنی گروپ اور جعلی اکاؤنٹس سے متعلق تحقیقات کر رہے تھے تاہم جب بعد میں جج ارشد ملک کی ویڈیو کا کیس منظرعام پرآیا توا س وقت وزیراعظم اوربشیرمیمن کے درمیان معاملات خراب ہوئے کہ شاید جس طرح سے حکومت تحقیقات چاہتی تھی اس طرح سے بشیرمیمن تحقیقات نہیں کرپائے تھے اور اسی ایشو کی بنا پرانہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔ مگر یہ بھی ہے کہ جب بشیر میمن صاحب عدالت میں اپنا کیس لڑ رہے تھے تب انہوں نے ایسے کوئی الزامات نہیں لگائے تھے اورنہ ہی عوام کو یہ بتایا تھا کہ حکومت نے انہیں زیادتی کرتے ہوئے وقت سے پہلے جبری ریٹائرکردیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.