پاکستان

وزیراعظم عمران خان کو صبح 11 بجے سموسے خریدنا مہنگا پڑ گیا، پروٹوکول کے بغیر اسلام آباد کے ویران بازاروں کا دورہ کرنے پر ایک نئی بحث چھڑ گئی، سب حیران رہ گئے

عمران خان بظاہر خود گاڑی چلا کر جی الیون مرکز پہنچے‘دکانداروں اور ٹھیلے والوں سے کورونا سے بچاؤ کے ایس او پیز پر عملدرآمد کی گزارش کی

وزیراعظم عمران خان کو صبح 11 بجے سموسے خریدنا مہنگا پڑ گیا، پروٹوکول کے بغیر اسلام آباد کے ویران بازاروں کا دورہ کرنے پر ایک نئی بحث چھڑ گئی، سب حیران رہ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور ان کی ٹیم کی جانب سے گذشتہ روز سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو لگائی گئی جس کا عنوان تھا کہ وزیر اعظم عمران خان بغیر سکیورٹی اور پروٹوکول کے ساتھ خود کار چلا کر اسلام آباد کے عوامی مقامات کی طرف گئے ہیں۔ انٹرنیٹ کے مختلف پلیٹ فارمز پر اس ویڈیو پر کافی بات چیت ہو رہی ہے۔ بعض حلقوں کی جانب سے اس پر حکمران جماعت کو سراہا جا رہا ہے اور ان کے مطابق وی آئی پی کلچر کے خاتمے سے ہی ملک آگے بڑھ سکتا ہے جبکہ کچھ لوگوں نے اس پر تنقید کی ہے کہ یہ پبلیسٹی سٹنٹ سے زیادہ کچھ نہیں کیونکہ ماہِ رمضان کے دوران پی ٹی آئی کی حکومت بڑھتی مہنگائی کو قابو نہیں کر سکی ہے۔

سرکاری سطح پر جاری کی گئی اس ویڈیو کی ابتدا میں عمران خان بظاہر خود گاڑی چلا کر جی الیون مرکز پہنچتے ہیں اور یہاں دکانداروں اور ٹھیلے والوں سے کورونا سے بچاؤ کے ایس او پیز پر عملدرآمد کی گزارش کرتے ہیں اور ویڈیو کے بیک گرانڈ میں ایک گانے کے بول کیسی یہ ہواں چلیں، امیدیں تجھ سے جڑیں سنے جاسکتے ہیں۔ ساتھ کسی کی بھاری آواز میں کمنٹری بھی جاری رہتی ہے جس میں بتایا جاتا ہے یہ جی الیون مرکز۔۔۔ پرائم منسٹر صاحب یہاں پہنچے ہیں۔۔۔ جائزہ لینے کے لیے۔۔۔ ہر ایک کے پاس جا رہے ہیں۔۔۔

وزیر اعظم کی ٹیم کافی فخر سے اس ویڈیو کو شیئر کر رہی ہے۔ سینیٹر فیصل جاوید نے لکھا کہ وزیراعظم عمران خان آج دوران ڈرائیونگ ہر بند سگنل پر رکے۔ سگنل کھلنے کا انتظار کیا۔ اس کے بعد عمران خان آئی نائن کے سیویج پلانٹ اور کورنگ کرکٹ گراؤنڈ بھی گئے۔ احساس پروگرام سے معاونت حاصل کرنے والے ان ریڑھی بانوں سے عمران خان کی گفتگو بھی ہوئی۔ بعد ازاں ان افراد کے انٹرویو بھی کیے گئے جن سے عمران خان کی بات ہوئی تھی۔ جب اس سموسے والے کا انٹرویو کیا گیا تو اس کا کہنا تھا کہ عمران خان نے ہمارا حال پوچھا۔۔۔ ہمیں خوشی ہے کہ وہ خود ہمارے پاس آئے ہیں۔ آج تک ہمارے پاس کوئی وزیر اعظم نہیں آیا۔ ہم یہ دیکھ کر ہی حیران ہوگئے۔ یہاں ایک بچہ بھی موجود تھا جس سے عمران خان نے بات کی تھی۔ اس نے اپنے انٹرویو میں بتایا کہ میں ان کی فوٹو کھینچنا چاہتا تھا مگر انھوں نے منع کردیا۔۔۔ میں پیغام دینا چاہوں گا کہ دوبارہ آئیں اور فوٹو کھینچنے دیں۔ ایک دوسرے شخص نے بتایا کہ عمران خان سادگی سے بغیر پروٹوکول کے آئے تھے۔ ہم سمجھے کوئی سموسے پکوڑے لینے آیا ہے۔۔۔ خان صاحب (بے شک)سارے تھال اٹھا کر لے جاتے، ان کے لیے جان بھی حاضر ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.