پاکستان

خاتون اسسٹنٹ کمشنر سونیا صدف سے بھرے بازار میں توہین آمیز سلوک، چیف سیکرٹری اور فردوس عاشق اعوان اپنے اپنے مؤقف پر ڈٹ گئے، وزیراعلیٰ پنجاب کو مشکلات کا سامنا

کسی بھی سرکاری افسر کے ساتھ غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے کی مذمت کرتا ہوں، اپنے موقف پر قائم ہوں، افسروں کو گالی دینا مناسب نہیں

خاتون اسسٹنٹ کمشنر سونیا صدف سے بھرے بازار میں توہین آمیز سلوک، چیف سیکرٹری اور فردوس عاشق اعوان اپنے اپنے مؤقف پر ڈٹ گئے، وزیراعلیٰ پنجاب کو مشکلات کا سامنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق عثمان بزدار کے ساتھ ہونے والی ملاقات میں فردو س عاشق اعوان اور چیف سیکرٹری پنجاب نے سیالکوٹ میں اے سی سونیا صدف اور فردوس عاشق کے درمیان پیش آنے والے معاملے سے متعلق معلومات فراہم کیں۔ چیف سیکرٹری نے کہا کہ کسی بھی سرکاری افسر کے ساتھ غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے کی مذمت کرتا ہوں، اپنے موقف پر قائم ہوں، افسروں کو گالی دینا مناسب نہیں ہے۔ فردو س عاشق اعوان نے کہا کہ عوام افسروں سے نہیں ہم سے سوالات کرتے ہیں،افسر جواب دینے کو تیار ہی نہیں، سونیا صدف دفتر سے باہر آکر بازار و ں میں اشیاکو چیک ہی نہیں کرتیں، کام نہ کرنے والے افسروں کی نشاندہی کرنا ہمارا کام ہے۔ چیف سیکریٹری نے کہا کہ اسسٹنٹ کمشنر سونیا صدف و دیگر انتظامی افسران دن رات محنت کرتے ہیں، سرکاری افسر یا عملے کے ساتھ غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے کی مذمت کرتاہوں، گالی دینے کے معاملے پر فردوس عاشق اعوان کو معذرت کرنی چاہیے۔ چیف سیکرٹری پنجاب نے کہ ہم وزیراعلی کی مشاورت سے ہی افسران کو تعینات کرتے ہیں، ویڈیو میں جو جملے کہے گئے وہ آپ کے سامنے ہیں۔وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے دونوں کا موقف سننے کے بعد کہا کہ میرٹ پر فیصلہ کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.